جماعت اسلامی کا پنجاب کے بلدیاتی آرڈیننس میں ترمیم چیلنج کرنے کا اعلان

26 جولائی 2015

لاہور (سپیشل رپورٹر) جماعت اسلامی نے حکومت پنجاب کے بلدیاتی آرڈنینس میں ترمیم کو عدالت عالیہ میں چیلنج کرنے کا اعلان کر دیا ہے جماعت اسلامی اس اہم مسئلہ پر تمام جماعتوں سے رابطے بھی کرے گی اور اس کے خلاف پنجاب بھر میں عوامی احتجاج کو منظم بھی کیا جائے گا۔ ان خیالا ت کا اظہار پارلیمانی لیڈر صوبائی اسمبلی ڈاکٹر سید وسیم اختر نے امیر العظیم اور میاں مقصود احمد ، فاروق چوہان اور عبدالعزیز عابد کے ہمراہ پریس کانفرنس میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب بلدیاتی انتخابات میں تاخیر کرنا چاہتی ہے مگر ہم اس سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ خیبر پی کے کی طرح پنجاب میں بھی بلدیاتی انتخابات ضرور ہونگے اور حکومت پنجاب کو یہ آخرکا کرانا پڑیںگے کیونکہ یہ ایک آئینی اور قانونی تقاضہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے بلدیاتی آرڈنینس میں جو ترمیم کی ہے یہ عوام کے حق انتخاب پر شب خون مارنے کے سازش ہے عید کی چھٹیوں سے قبل یہ ترامیمی آرڈنینس اس لئے پیش کیاگیا کہ اس پر زیادہ بحث نہ ہو۔ یونین کونسلوں میں دو خواتین ایک کسان / لیبر ایک ، یوتھ اور ایک اقلیتی ممبر کا بل واسطہ انتخاب دراصل بلدیاتی نظام پیسے اور سرکاری دبائو کو قانونی تحفظ دینے کے مترادف ہے۔