پاکستان اور آئی ایم ایف میں مذاکرات 29 جولائی سے دبئی میں شروع ہونگے

26 جولائی 2015

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی) پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان 8 ویں جائزہ کے تحت مذاکرات 29 جولائی سے دبئی میں شروع ہوں گے۔ 8 ویں معاشی جائزہ کے تحت اپریل تا جون 2015ءکی معاشی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا۔ اس دور میں پاکستانی اور عالمی مالیاتی ادارے کے وفد کے درمیان جی ایس ٹی کے نظام میں اصلاحات کے لئے بھی مشاورت کی جائے گی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اپریل تا جون کے عرصہ میں پاکستان کے صرف ریونیو کے ہدف کا استثنیٰ لینا پڑے گا کیونکہ ایف بی آر کی ناقص کارکردگی کی وجہ سے 2605 بلین روپے کا ہدف حاصل نہیں ہو سکا۔ ذرائع کا دعویٰ ہے کہ پاکستان آئی ایم ایف کے موجودہ پروگرام کے دائرے سے باہر جانے کا متمنی ہے کیونکہ جولائی سے ستمبر 2015ءتک کے جائزہ کے سلسلہ سے مشکلات شروع ہو جائیں گی کیونکہ حکومت اداروں کی نجکاری سمیت مختلف ایشوز پر پیشرفت کی پوزیشن میں نہیں ہے اسے سیاسی مشکلات ہوں گی۔ اس لئے آئی ایم ایف کے موجودہ پروگرام کی معیاد میں ایک سال کی کمی کی تجویز گردش کر رہی ہے۔ وزیر خزانہ مذاکرات میں شرکت کریں گے جو اگست کے پہلے ہفتہ میں ہوں گے۔
مذاکرات