سیز فائر مذاکرات کے ایجنڈے پر ہے، امید ہے طالبان اتفاق کرینگے: نمائندہ افغان حکومت

26 جولائی 2015

کابل (رائٹرز) طالبان کے ساتھ مذاکرات کے پہلے دور میں شریک رہنے والے افغان حکومت ایجنڈے میں شامل ہوگا۔ افغان حکومت کے نمائندے نے کہا کہ مذاکرات کے دوسرے دور میں سیز فائر ایجنڈے میں شامل ہوگا۔ افغان حکومت کے مذاکرات کار محمد ناتقی نے کہا کہ ہم مکمل طور پر سیز فائر کی بات کریں گے اور امید ہے دوسری جانب بھی اس پر متفق ہوجائیگی۔ سیز فائر سے عوام میں امید پیدا ہو گی۔ یہ مذاکرات اچھے نتائج لائیں گے۔ انہوں نے کہا مذاکرات کے پہلے دور میں بھی سیزفائر کا معاملہ اٹھایا گیا تاہم اس پر دوسرے مرحلے میں تفصیلی بات چیت کا فیصلہ کیا گیا۔ اس مرتبہ مذاکرات کرنیوالے طالبان میں ان کے قطر آفس اور کوئٹہ شوری سے متعلق رہنما بھی شریک ہوں گے۔ مذاکرات کے دوران عبوری سیز فائر 13 سالہ افغان جنگ میں بڑا بریک تھرو ثابت ہو سکتا ہے تاہم یہ غیرواضح ہے کہ طالبان کے نمائندے کسی سیز فائر پر رضامند ہوتے ہیں یا نہیں۔ اس بات کی بھی یقین دہانی نہیں کرائی جاسکتی کہ سیز فائر کی صورت میں اس پر کس حد عملدرآمد کرایا جا سکے گا کیونکہ مبینہ طور پر افغان حکومت سے مذاکرات کے حوالے سے طالبان رہنماﺅں میں تقسیم کی باتیں سامنے آچکی ہیں۔
افغان حکومت مذاکرات