4خود کشیاں: فیصل آباد میں میٹرک کی طالبہ نے 4 نمبر کم آنے پر زندگی ختم کرلی

26 جولائی 2015

لاہور+ فیصل آباد (سٹاف رپورٹر+ نمائندہ خصوصی+نامہ نگاران) شیراکوٹ کے علاقہ میں 22 سالہ لڑکی نے نامعلوم وجوہات پر زندگی ختم کرلی۔ یوسف کی بیٹی اقراء نے اچانک کمرے میں جا کر دروازہ بند کر لیا اور زہریلی گولیاں کھا لیں گھر کے دیگر افراد نے دروازہ کھولا تو وہ مردہ حالت میں پڑی تھی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ متوفیہ کی والدہ نے بتایا ہے کہ پتہ نہیں اس نے کس وجہ سے خود کشی کی، پوسٹمارٹم کے بعد اصل حقائق سامنے آنے پر مزید کارروائی کی جائے گی۔علاوہ ازیں فیصل آباد میں گوجرہ کی پندرہ سالہ عائشہ نے میٹرک کے رزلٹ میں کامیابی حاصل کرنے کے بعد میڈیکل میں داخلہ لینے کیلئے رزلٹ میں 4 نمبر کم آنے پر گندم میں رکھنے والی زہریلی گولیاں کھا کر زندگی ختم کرلی۔بتامیٹرک کے رزلٹ میں عائشہ نے 915 نمبر لے کر کامیابی حاصل کی لیکن وہ میڈیکل میں داخلے کی خواہشمند تھی چنانچہ میڈیکل میں داخلہ کے لئے 4 نمبر کم تھے ۔سمن آباد کے طالب علم فرحان نے میٹرک کے نتائج میں 2 سپلیاں آنے پر زہریلی گولیاں کھا کر خود کشی کی ناکام کوشش کی۔ علاوہ ازیں بھلوال میں دو بچوں کی ماں نے خاوند سے جھگڑے کے بعد زہریلی گولیاں کھا لیں۔ مقامی آبادی اہلی کی خاتون عروج کو ڈسٹرکٹ ہسپتال سرگودھا لے جایا گیا مگر وہ جانبر نہ ہو سکی۔ ٹوبہ میں عبدالرشید ولد نور محمد چک نمبر 349گ۔ ب آیا اور وہاں مقامی قبرستان میں اپنی والدہ کے قبر کے قریب لگے ہوئے درخت سے پھندا لیکر خودکشی کر لی۔