متحدہ قومی موومنٹ نے مطالبات کی منظوری کیلئے پیپلز پارٹی کو تین روز کا الٹی میٹم دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر انکے جائز مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو وہ اپوزیشن میں بیٹھیں گے۔

25 ستمبر 2012 (13:11)

متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی لندن اور پاکستان کےاراکین کا مشترکہ اجلاس ہوا۔ اجلاس میں کہا گیا کہ پیپلز پارٹی نے بار بار کے وعدوں کے باوجود ایم کیو ایم کے عوامی فلاح و بہبود کے مطالبات نہیں مانے۔ ایم کیو ایم کی قوت برداشت اور خلوص کو پیپلز پارٹی کے رہنماؤں نے ہمیشہ اسکی کمزوری سمجھا۔ اجلاس میں متفقہ طور پر فیصلہ کیا گیا کہ پیپلز پارٹی کو تین روز کا الٹی میٹم دیا جائے کہ وہ  جائز مطالبات پورے کرے، اگر مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو ایم کیو ایم تین دن بعد حکومت سے علیحدہ ہو کر اپوزیشن بنچوں پر بیٹھے گی۔ اجلاس میں کہا گیا کہ ایم کیو ایم کی جانب سے جمہوریت کی بقاء اور موجودہ حکومت کے جائز اقدامات کی حمایت جاری رہے گی۔ رابطہ کمیٹی نے اپیل کی کہ عوام آئندہ کے لائحہ عمل کا انتظار کرتے ہوئے ماضی کی طرح ہر آزمائش سے گذرنے اور قربانیاں دینے کیلئے تیار رہیں۔