الیکشن کمیشن نے رحمان ملک سمیت بارہ ارکان پارلیمنٹ کے خلاف فوجداری مقدمات کے اندراج کے لیے متعلقہ سیشن ججز کو احکامات بھجوا دیئے۔

25 ستمبر 2012 (11:11)
الیکشن کمیشن نے رحمان ملک سمیت بارہ ارکان پارلیمنٹ کے خلاف فوجداری مقدمات کے اندراج کے لیے متعلقہ سیشن ججز کو احکامات بھجوا دیئے۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ذرائع کے مطابق  رحمان ملک سمیت بارہ اراکین پارلیمنٹ کے خلاف مختلف دفعات کے تحت فوجداری مقدمات درج کرنے کے احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے یہ احکامات متعلقہ سیشن ججز کو جاری کئے گئے ہیں۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ذرائع کا کہنا ہے کہ اس کیس میں ان اراکین کو تین سال تک قید، تین ہزار روپے جرمانہ اور پانچ سال تک نااہلی کی سزا ہو سکتی ہے۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان کا  یہ بھی کہنا ہے کہ رحمان ملک بھی ان ارکان میں شامل ہو چکے ہیں تاہم ان کے چئیرمین سینٹ کو بھجوائے گئے ریفرنس کا تیس روز تک انتظار کیا جائے گا۔ ریفرنس نہ آنے کی صورت میں الیکشن کمیشن ازخود کارروائی کرتے ہوئے رحمان ملک کو ڈی نوٹیفائی کر دے گا۔ رحمان ملک کے خلاف فوجداری مقدمے سمیت دیگر کارروائی ان گیارہ اراکین کے ساتھ ہو گی۔