بھارتی صدر 27 ستمبر کو مقبوضہ کشمیر کا دور کرینگے‘ حریت کانفرنس نے ہڑتال کی کال دیدی

25 ستمبر 2012

 سرینگر (آن لائن)کل جماعتی حریت کانفرنس گیلانی گروپ کے چیئرمین سید علی گیلانی نے جمعرات 27 ستمبر کو بھارتی صدر پرناب مکھرجی کے دورہ مقبوضہ کشمیر کے موقع پر وادی میں مکمل ہڑتال کی کال دیدی ہے۔ بھارتی صدر پرناب مکھرجی عہدے کا چارج سنبھالنے کے بعد سے27 ستمبر کو پہلی مرتبہ کشمیر کا دورہ کریں گے جہاں وہ کشمیر یونیورسٹی کے18 ویں کانووکیشن کی صدارت کریں گے ۔اس موقع پر سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کئے جائیں گے ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق گزشتہ روز ایک اعلی سطحی اجلاس میں سکیورٹی انتظامات کو حتمی شکل دیدی گئی ہے۔ دریں اثناءکل جماعتی حریت کانفرنس گیلانی گروپ کی طرف سے جاری بیان میں کہاگیا ہے کہ بھارتی صدر ایسے وقت کشمیر آرہے ہیں جب 10 ہزار سے زائد لاپتہ افراد کا پتہ چلانے کےلئے کوئی غیر جانبدارانہ تحقیقات نہیں کرائی گئی ہیں۔حتی کہ گمنام قبریں بھی دریافت ہوئی ہیں اور بھارتی حکومت اس پر خاموشی اختیار کئے ہوئے ہے۔ بھارتی صدر چونکہ مسلح افواج کے سربراہ بھی ہیں اس لئے وہ بھی اس کے ذمہ دارہیں اور فوج کی جانب سے حقوق انسانی کی خلاف ورزیوں پر جوابدہ ہیں۔بیان کے مطابق سید علی گیلانی نے بھارت پر اعتماد توڑنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ1947 ءمیں بھارتی افواج اس دعوے کے ساتھ یہاں اتری تھیں کہ صورت حال میں بہتری کے لئے ساتھ ہی وہ واپس چلی جائیں گی اور کشمیریوں کو اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کی اجازت دی جائے گی لیکن بھارت اپنے وعدے پر پورا نہیں اترے۔ انہوں27 ستمبر کو مکمل ہڑتال کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ہم بھارتی صدر بھارت کی قیادت اور عالمی تنظیموں کی طرف سے کئے گئے وعدوں اور ذمہ دایوں کی یاد دہانی کرانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے2008 اور2010 ءمیں کشمیری نوجوانوں کے قتل میں ملوث فورسز اہلکاروں کے خلاف ایک ایف آئی آر تک بھی درج نہیں کرائی ۔انہوں نے کہا کہ فوج کشمیر میں مذہبی معاملات میں مداخلت کررہی ہے۔دریں اثناءکل جماعتی حریت کانفرنس میر واعظ گروپ کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق 27 ستمبر کو کشمیر یونیورسٹی کے کانووکیشن میں شرکت نہیں کریں گے۔