عرب مسلمان نوجوان نے گستاخانہ فلم کا جواب ویڈیو بناکر دیدیا

25 ستمبر 2012

دبئی (آئی این پی )گستاخانہ فلم کے جواب میں مسلمان نوجوان نے منفرد ویڈیو بنائی ہے جس میں مسلمانوں اور غیر مسلم شہریوں سے اسلام، پیغمبر اسلام اور قرآن کریم کے بارے میں آرا حاصل کی گئی ہیں، سماجی رابطے کی ویڈیو سائٹ 'یوٹیوب' پر 'ہمارے بولنے کا وقت آ گیا میں اسلام کے تصور حلم، صبر اور بردباری کو خاص طور پر موضوع بنایا گیا ۔ امریکہ میں بنائی جانے والی گستاخانہ فلم نے اربوں مسلمانوں کے دل دکھائے۔ دوسری طرف جدید تعلیم یافتہ مسلمان نوجوان طبقے کو اس کا فلم ہی کی شکل میں جواب دینے کا موقع فراہم کیا ہے۔ عبیر علی نامی عرب مسلمان نوجوان نے گستاخانہ فلم کے مقابلے میں ایک مختصر دورانیئے کی ویڈیو تیار کی ہے۔انگریزی زبان میں بنائی جانے والی اس دستاویزی فلم میں مسلمانوں اور غیر مسلم شہریوں سے اسلام، پیغمبر اسلام اور قرآن کریم کے بارے میں ان کی آرا حاصل کی گئی ہیں۔ ویڈیو میں اسلام کے تصور حلم، صبر اور بردباری کو خاص طور پر موضوع بنایا گیا ہے۔ غیر مسلم نوجوان یہ تسلیم کرنے پر مجبور ہیں کہ اسلام ہی کرہ زمین کا ایسا مذہب ہے جو سب سے زیادہ برداشت کی تلقین، تشدد کی نفی اور دیگر ادیان کے پیروکاروں کے ساتھ امن بقائے باہمی کے اصول کے تحت آگے بڑھنے اور زندہ رہنے کی تاکید کرتا ہے۔