گستاخانہ فلم کے خلاف احتجاج جاری، ممبئی میں یو ٹیوب پر مقدمہ

25 ستمبر 2012
گستاخانہ فلم کے خلاف احتجاج جاری، ممبئی میں یو ٹیوب پر مقدمہ

 اسلام آباد + لندن + واشنگٹن (ایجنسیاں + نیٹ نیوز) گستاخانہ فلم اور خاکوں کے خلاف پاکستان سمیت دنیا بھر میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے، یونان میں پاکستانیوں سمیت دیگر ممالک سے تعلق رکھنے والے مسلمانوں نے مظاہرہ کیا۔ ایتھنز میں پاک ہیلینگ ویلفیئر سوسائٹی کی جانب سے مظاہرے کا اہتمام کیا گیا تھا۔ مظاہرین نے امریکی سفارت خانے کی جانب بڑھنا شروع کیا تو پولیس نے انہیں روکنے کے لئے آنسو گیس استعمال کی۔ مظاہرین منتشر ہونے کے بعد دوبارہ اومونیا اسکوائر پر جمع ہوئے جہاں نماز ظہر ادا کرنے کے بعد دوبارہ مظاہرہ کیا گیا۔ پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس اور کالی مرچوں کا اسپرے کیا۔ مشتعل مظاہرین نے کئی دکانوں اور گاڑیوں کے شیشے توڑ دئیے۔ رہنماو¿ں نے مظاہرین سے پرامن رہنے کی اپیل کی اور مطالبہ کیا کہ گستاخانہ فلم انٹرنیٹ سے ہٹا کر فلم بنانے والے کو سزا دی جائے۔ یمن کے دارالحکومت صنعا میں سیکڑوں خواتین اور بچیوں نے احتجاجی جلوس نکالا جو شہر کی مختلف سڑکوں سے ہوتا ہوا یمن کے صدر کی رہائش گاہ کے باہر پہنچا۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ گستاخانہ فلم بین الاقوامی امن کے لیے نقصان دہ اور نفرت پھیلانے کی کوشش ہے۔ مغربی حکومتیں ایسے اقدامات کی روک تھام کے لئے قانون سازی کریں۔ لندن میں امریکی سفارتخانے کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیاگیا جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی، مظاہرے کے دوران سکیورٹی کے سخت اقدامات کئے گئے۔ یورپ میں بھی مظاہرے کئے جارہے ہیں۔ لندن میں امریکی سفارتخانے کے باہر احتجاج کیا گیا۔ مظاہرے میں بڑی تعداد میں خواتین اور بچوں نے بھی شرکت کی۔ شدید بارش کے باوجود مظاہرے میں شریک افراد کھڑے رہے اور اپنے غم وغصے کا اظہارکیا۔ مظاہرین نے مطالبہ کیاکہ گستاخانہ فلم بنانے والے شخص کو سخت سے سخت سزادی جائے۔ گستاخانہ فلم کے حوالے سے یو ٹیوب پر مقدمہ دائر کیا گیا ہے۔ ممبئی کے مقامی وکیل اعجاز نقوی نے گستاخانہ فلم کے پروڈیوسر اور یو ٹیوب پر فلم کے ٹریلر ڈالنے کے خلاف مقدمہ دائر کیا، کیس کی سماعت ممبئی ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کھن ولکر کریں گے۔ یہ مقدمہ کانگرس پارٹی کے رکن امین مصطفی ادریسی کے نام سے اعجاز نقوی وکیل نے دائر کیا ہے۔ مسٹر ادریسی نے فلم کے ٹریلر نشر کرنے پر گوگل کے چیف ایگزیکٹو لیری پیج کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ گوگل اور یو ٹیوب پر مقدمہ چلانے کی بات کہی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ یو ٹیوب پر فلم کے آنے سے مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے۔ بھارت میں اس فلم کے ٹریلر اور اس کے جزوی حصے اب بھی یو ٹیوب کی سائٹ پردیکھے جا سکتے ہیں عرضی گزار کا کہنا ہے اگر انہیں نہ ہٹایا گیا تو اس سے حالات مزید کشیدہ ہو سکتے ہیں۔ بھارت میں فلم کے خلاف سب سے زیادہ مظاہرے جنوبی ریاست تامل ناڈو اور مقبوضہ کشمیر میں دیکھنے میں آئے۔ ” سی این این“ نے گستاخانہ فلم پر مسلمان ممالک میں ہونے والے احتجاج ‘ امریکیوں کو لاحق خطرات اور 9/11 جیسے کسی بھی ممکنہ خطرے کے پیش دنیا بھر میں بسنے والے ہر قوم و مذہب کے افراد کی رائے پر مبنی سروے شروع کرادیا ہے، سی این این کی طرف سے کرائے جانے والے سروے میں لوگوں سے رائے مانگی گئی ہے کہ وہ اس بات کے حق میں ہیں یا خلاف کہ گستاخانہ خاکے شائع کئے جا سکتے ہیں یا نہیں؟۔ عرب خطہ سے بڑی تعداد میں ووٹ پول کئے گئے ہیں جس میں فلم کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے گمراہ کن قرار دیاگیا ہے یورپ اور امریکہ کے نہ صرف مسلمانوں بلکہ عیسائیوں کی جانب سے بھی اس گستاخانہ فلم کیخلاف ووٹ پول کیا گیا ہے اور اس فلم کی فوری بندش کا مطالبہ کیا گیاہے۔ افغانستان میں سینکڑوںکی تعداد میں لوگوں نے گستاخانہ فلم اور فرانسیسی میگزین میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرین نے امریکہ اور فرانس کے ساتھ تعلقات منقطع کرنے کا مطالبہ کیا۔ افغان میڈیا کی رپورٹ کے مطابق پانچ سو سے ایک ہزار کے قریب افراد صوبہ بدخشاں کے ضلع کیشم کی سڑکوں پر نکل آئے اور امریکہ اور روس کیخلاف نعرے بازی کی۔ مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ گستاخی کرنے والوں کو سزا ملنی چاہیے افغانستان دونوں ممالک کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کردے تاکہ اسلام کیخلاف مزید کارروائیاں نہ ہوں۔ سری لنکا میں ہزاروں مسلمانوں نے گستاخانہ فلم کیخلاف امریکی سفارتخانے کی طرف احتجاجی مارچ کیا امریکی مصنوعات کے بائیکاٹ کا مطالبہ کیا۔ بیس ہزار کے قریب افراد بینرز اٹھائے دارالحکومت کولمبو میں جمع ہوئے اور امریکی سفارتخانے کی طرف مارچ کیا جہاں سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کئے گئے ہیں ۔ مظاہرین نے بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر امریکی مصنوعات کے بائیکاٹ کے مطالبے کے حق میں نعرے درج تھے یہ شہر میں دوسری بڑی امریکہ مخالف ریلی تھی جس کے پیش نظر حفاظتی نقطہ نظر سے امریکی سفارتخانہ کو بند کردیا گیا تھا پرامن احتجاجی مارچ مغربی صوبہ کے گورنر کررہے تھے مظاہرین یو ٹیوب پر امریکی فلم پر پابندی کا مطالبہ بھی کررہے تھے ان کا کہنا تھا کہ ہمارے دل زخمی ہیں اور سینے غم سے شرابور ہیں گستاخانہ فلم بنانے والوں کو سخت سے سخت سزا دی جائے تاہم اس موقع پر مظاہرین کو سفارتخانے کے نزدیک جانے سے روک دیا گیا۔ سری لنکا اور بنگلہ دیش کے ہزاروں مسلمانوں نے مظاہروں میں شرکت کی، تہران میں بھی فلم کے خلاف مظاہرے ہوئے۔
لاہور+ گوجرانوالہ+ حافظ آباد (نامہ نگار خصوصی+ نمائندہ خصوصی+ نمائندہ نوائے وقت) لاہور سمیت ملک بھر میں گذشتہ روز بھی گستاخانہ فلم کے خلاف مظاہروں اور ریلیوں کا سلسلہ جاری رہا جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ عوام نے امریکی پرچم اور ملعون پادری کے پتلے نذر آتش کئے۔ مظاہرین ”گستاخ رسول کی ایک سزا سر تن سے جُدا“ غلامی رسول میں موت بھی قبول ہے‘ کے نعرے لگاتے رہے۔ تفصیلات کے مطابق سنی تحریک کے زیراہتمام گستاخانہ فلم کیخلاف شادباغ میں بڑا احتجاجی مظاہرہ ہوا جس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا مجاہد عبدالرسول خان اور دیگر رہنماﺅں نے کہا کہ مغربی دنیا کو مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کرنے سے باز رہنا چاہئے۔ امریکہ اور یہودی لابی کو کروڑوں مسلمانوں کے مذہبی جذبات سے کھیلنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ اس موقع پر محمد طاہر قادری، نواز قادری، علامہ شفاقت ہمدمی، علامہ رب نواز چشتی، علامہ سرفراز سیالوی، علامہ محمد عمران نظامی سمیت علماءکرام، ممتازسیاسی، مذہبی اور سماجی شخصیات اور سنی تحریک کے عہدیداروں اور کارکنوں کی کثیر تعداد موجود تھی۔ تحریک حرمت رسول، جماعة الدعوة سمیت دیگر جماعتوں اور تنظیموں کے زیراہتمام گستاخانہ فلم کے خلاف گزشتہ روز بھی ملک گیر احتجاج جاری رہا۔ لاہور، قصور، سیالکوٹ، ملتان، گوجرانوالہ، ساہیوال، خوشاب و دیگر شہروں میں حرمت رسول کانفرنسیں اور احتجاجی مظاہرے و ریلیاں منعقد کی گئیں جن میںگستاخوں کو پھانسی دینے کا مطالبہ کیا گیا، کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا عبدالعزیز مدنی نے کہا کہ گستاخانہ فلم دنیا کی تاریخ کی سب سے بڑی دہشت گردی ہے اس دہشت گردی میں ملوث ٹیری جونز و دیگر ملعونوں کو پھانسی کے پھندے پر لٹکا یا جائے۔ سیالکوٹ میں حرمت رسول کانفرنس میں خالد سیف الاسلام، محمد عمر ربانی نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ توہین آمیز امریکی فلم سے مسلمانوں کے دلوں میں نفرت کی آگ بھڑک رہی ہے۔ ملتان میں شمشاد سلفی، ساہیوال میں مولانا غلام قادر سبحانی، پاکپتن میں مولانا طاہر طیب بھٹوی، گوجرانوالہ میں قاری احمد سعید ملتانی، حافظ محمد اکرم، خوشاب میں بشیر احمد خاکی، محمد اسماعیل سلفی، سیف اللہ ربانی و دیگر نے کانفرنسوں سے خطاب کیا جبکہ لاہور میں احتجاج کے دوران لا اینڈ آرڈر کی صورتحال برقرار رکھنے کے لئے تین ہزار اہلکار سکیورٹی ڈیوٹیاں سرانجام دے رہے ہیں جبکہ امریکن قونصلیٹ کے گردونواح سے کنٹینر تاحال نہیں ہٹائے گئے ہیں جس سے یہاں ٹریفک کا مسئلہ بدستور گھمبیر صورتحال اختیار کئے ہوئے ہے۔ مرکزی جمعیت اہلحدیث پنجاب کے کارکنان نے گوجرانوالہ میں پروفیسر حافظ عبدالستار حامد اور قلعہ دیدار سنگھ میں حافظ عبدالرزاق کی قیادت میں ریلیاں نکالیں۔ مظاہرین نے پادری ٹیری جونز، فلم ڈائریکٹر اور امریکہ کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ پروفیسر حافظ عبدالستار، مولانا نعیم بٹ، حافظ عبدالرزاق، حافظ شاہد امین، مولانا ابرار ظہیر، مولانا صادق عتیق و دیگر نے خطاب کیا۔ گوجرانوالہ میں گستاخانہ فلم کے خلاف قومی امن کمیٹی برائے بین المذاہب ہم آہنگی کے زیر اہتمام ریلی نکالی گئی۔ ریلی شیرانوالہ باغ سے شروع ہو کر گوندلانوالہ چوک میں پہنچی اس موقع پر قائدین نے خطاب کرتے ہوئے امریکہ سے مطالبہ کیاکہ آپ اور انبیاءکرام کے خلاف شر پسند عناصر کے پشت بناہی کرنے والوں کی سر کوبی کی جائے اور مسلمانوں کے اندر پائی جانے والی بے چینی کو ختم کیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار سید صادق شاہ ، حاجی مدثر سلیم ، علامہ سبطین شاہ ، ڈاکٹر زاہد سلیم ، مرزا کاشف، محیل رضا عابدی ، مجاہد نقوی، جاوید محمود بٹ، تنویر خاں، حسن عسکری، عامر امین، حافظ عادل جیلانی، عبدالرحیم سرہندی، فیاض احمد و دیگر نے بھی کیا۔ گکھڑمنڈی سے نامہ نگار کے مطابق گستاخانہ فلم کے خلاف پرائیویٹ سکول ایسوسی ایشن کے طلبا اور اساتذہ نے سجاد مسعود چشتی کی قیادت میں جلوس نکالا۔ اس موقع پر صاحبزادہ سجاد مسعود چشتی نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پوری امت مسلمہ کے حکمرانوں کو امریکہ کے سامنے ڈٹ جانا چاہئے۔ حافظ آباد سے نمائندہ نوائے وقت کے مطابق جمعیت اہلحدیث کے زیراہتمام ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہاکہ دشمنان اسلام مختلف حیلے بہانوں سے توہین رسالت کرکے مسلمانوں کو مشعل کر رہے ہیں، نبی رحمت کے پیروکار اپنے پیارے نبی کی شان میں کسی قسم کی گستاخی برداشت نہیں کر سکتے۔ ریلی میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ چودھری عارف عزیز، مولانا ابراہیم علوی، مولانا عمران تبسم، مولانا عطاءاللہ محمدی، قاری یوسف، طارق مدنی اور عبدالحمید رحمانی نے خطاب کیا جبکہ حافظ آباد کے قریب جلہن میں علماءنے قاری منیر احمد کی قیادت میں ریلی نکالی۔ اس دوران شرکاءریلی نے امریکہ اور ملعون پادری کے خلاف سخت نعرہ بازی کی۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...