نواز ‘ شہباز شریف سے ملاقات: احمد مختار کے بڑے بھائی احمد سعید مسلم لیگ ن میں شامل

25 ستمبر 2012

لاہور (خصوصی رپورٹر) وفاقی وزیر دفاع اور پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما چودھری احمد مختار کے بڑے بھائی چودھری احمد سعید سابق ایم ڈی پی آئی اے مسلم لیگ (ن) میں شامل ہو گئے ہیں۔ چودھری احمد سعید نے مسلم لیگ (ن) کے صدر محمد نوازشریف اور صدر پنجاب و وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے پیر کو رائے ونڈ میں ملاقات کی اور ان کی قیادت پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) میں شامل ہونے کا اعلان کیا۔ نوازشریف نے چودھری احمد سعید کو قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 105 گجرات سے مسلم لیگ (ن) کا ٹکٹ دینے کا اعلان کیا۔ نوازشریف، شہباز شریف نے اس موقع پر کہا کہ چودھری احمد سعید کی مسلم لیگ (ن) میں شمولیت سے مسلم لیگ (ن) گجرات میں مزید فعال اور مضبوط ہو گی۔ احمد سعید نے کہا وہ گجرات میں (ق) لیگ کے صدر چودھری شجاعت حسین کے خلاف الیکشن لڑیں گے۔ محمد نوازشریف نے چودھری احمد سعید کی مسلم لیگ (ن) میں شمولیت کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا مسلم لیگ (ن) کی مقبولیت تیزی سے بڑھ رہی ہے اور آئندہ عام انتخابات میں عوام مسلم لیگ (ن) پر بھرپور اعتماد کا اظہار کریں گے۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ محمد شہباز شریف نے چودھری احمد سعید کو مسلم لیگ (ن) میں شمولیت اختیار کرنے پر خوش آمدید کہتے ہوئے کہا ان کی شمولیت سے پارٹی مزید مضبوط ہو گی۔ انہوں نے کہا جمہوریت اور جمہوری اداروں کے استحکام کے لئے مسلم لیگ (ن) کے اصولی م¶قف کو تمام حلقوں میں پذیرائی مل رہی ہے اور مسلم لیگ (ن) کے صدر محمد نوازشریف ہی واحد قومی لیڈر ہیں جو ملک کو بحرانوں سے نکالنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور 18 کروڑ عوام کےلئے امید کی کرن ہیں۔ انہوں نے کہا چودھری احمد سعید جیسی زیرک شخصیت کی مسلم لیگ (ن) میں شمولیت سے ےہ ثابت ہوتا ہے مسلم لیگ (ن) کے صدر محمد نوازشریف کی قیادت میں ےہی پارٹی ملک میں حقیقی تبدیلی لانے اور عوام کے مسائل حل کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ اے پی اے کے مطابق وفاقی وزیر پانی و بجلی چودھری احمد مختار نے کہا ہے اکثر ایسا ہوتا رہا ہے میرے پیپلز پارٹی کے ساتھ تعلق اور میری سیاست پر کوئی اثر نہیں پڑے گا، بھائی کی اپنی مرضی ہے، ان کی مرضی جہاں وہ چاہیں جائیں، میں مرتے دم تک پیپلز پارٹی میں رہوں گا۔ میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا میں اپنے بڑے بھائی چودھری احمد سعید کی مسلم لیگ (ن) میں شمولیت پر زیادہ تبصرہ نہیں کر سکتا، وہ اپنی مرضی کے مالک اور فائدے نقصان کی پہچان رکھنے والے انسان ہیں، مجھے ان کی مسلم لیگ (ن) میں شمولیت سے کوئی مسئلہ نہیں، میری وفاداری پیپلز پارٹی کے لئے تھی اور ہمیشہ پیپلز پارٹی کے لئے ہی رہے گی۔ انہوں نے کہا میرے بھائی اپنی مرضی سے مسلم لیگ (ن) میں شامل ہوئے میری ان کی شمولیت کے لئے مرضی شامل نہیں۔ انہوں نے کہا پاکستان کی سیاست میں یہ پہلی مرتبہ نہیں ہوا بلکہ اس سے پہلے بھی کئی بار ایسا ہو چکا ہے کہ ایک بھائی کسی ایک پارٹی میں تو دوسرا کسی اور پارٹی میں ہوتا ہے لیکن میرا بھائی یہ سمجھتا ہے کہ وہ مسم لیگ (ن) میں شامل ہو کر عوام کی خدمت کر سکتا ہے تو یہ اس کی بھول ہے۔ انہوں نے کہا آئندہ انتخابات میں پتہ چل جائے گا کہ عوام صرف پیپلز پارٹی کے ساتھ ہیں اور جہاں تک میرا تعلق ہے تو میں مرنے تک تو پیپلز پارٹی میں ہوں اس کے بعد کا پتہ نہیں۔