دوہری شہریت : منتخب نمائندوں سے نیا حلف نامہ لیا جائے گا‘ رحمن ملک اور 11 نااہل ارکان کے کیس قانونی کارروائی کیلئے سیشن ججوں کو بھجوا رہے ہیں: الیکشن کمشن

25 ستمبر 2012

 اسلام آباد (نوائے وقت نیوز + ایجنسیاں) سیکرٹری الیکشن کمشن اشتیاق احمد نے کہا ہے کہ نااہل قرار دئیے گئے 11 منتخب نمائندوں اور وفاقی وزیر داخلہ رحمن ملک کے خلاف کارروائی شروع کر دی ہے۔ غلط بیانی کرنے پر ان 12 عوامی نمائندوں کے کیسز متعلقہ سیشن ججوں کو بھیج دئیے گئے ہیں ۔ 11 افراد کو نااہل قرار دینے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دوہری شہریت رکھنے و الے ارکان نااہل ہو چکے ہیں تاہم رحمن ملک ابھی نااہل نہیں ہوئے، وہ بدستور سینیٹر اور وزیر داخلہ ہیں ۔ انہیں ابھی ڈی نوٹیفائی نہیں کیا گیا۔ چیئرمین سینٹ سے ریفرنس مل جائے تو پھر رحمن ملک کی نااہلی کا فیصلہ ہو گا ۔ رحمن ملک کا کیس چیئرمین سینٹ کو بھیج دیا گیا ہے، چیئرمین سینٹ نے 30 دن میں فیصلہ کرنا ہے اگر چیئرمین سینٹ نے 30 دن میں فیصلہ نہ کیا تو الیکشن کمشن فیصلہ کرے گا ۔ 12 ارکان کے خلاف متعلقہ سیشن ججوں کو شکایات ارسال کر دی گئی ہیں ۔ الیکشن کمشن نے منتخب ارکان سے دوہری شہریت پر نیا حلف نامہ لینے کا فیصلہ کر لیا ۔ رحمن ملک کے خلاف کارروائی کے لئے معاملہ متعلقہ سیشن جج کو بھیج دیا ہے۔ اشتیاق احمد نے کہا کہ عام انتخابات پر سیاسی جماعتوں کو 27 ستمبر کو بلایا ہے ان کی تجویز پر غور کیا جائے گا۔ الیکشن کمشن انتخابات کرانے کے لئے تیار ہے۔ سیشن جج کے فیصلے کے خلاف ارکان اپیل دائر کر سکتے ہیں ۔ سیشن جج کی کارروائی پر نااہل ارکان کو 3 سال قید اور 5 ہزار روپے جرمانہ ہو سکتا ہے۔ آئندہ دوہری شہریت رکھنے والا شخص انتخابات میں حصہ نہیں لے سکے گا ۔ دوہری شہریت والے امیدوار الیکشن نہیں لڑ سکتے۔ پارلیمنٹ اور صوبائی اسمبلیو ں کے 11 ارکان نے جعلی دستاویزات جمع کرائی تھیں۔ وزیر داخلہ رحمن ملک کو مالدیپ میں الیکشن کمشن کے فیصلے سے آگاہ کر دیا گیا ہے۔ رحمن ملک کا کہنا تھا کہ سیشن جج کی عدالت میں پیش ہوں گا اور عدالت کے سامنے اپنی بے گناہی ثابت کروں گا ۔ اس سے قبل اجلاس میں الیکشن کمشن نے دوہری شہریت پر نااہل ارکان کے خلاف فوجداری مقدمات کا معاملہ صوبائی الیکشن کمشن کو بھیجنے کا فیصلہ کیا۔ کمشن نے صادق اور امین نہ رہنے والے وزیر داخلہ رحمن ملک کے خلاف عوامی نمائندگی ایکٹ کے تحت کارروائی پر بھی سنجیدہ غور کیا۔ چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) فخر الدین کی زیر صدارت اسلام آباد میں الیکشن کمشن کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں وزیر داخلہ رحمن ملک سے متعلق عدالتی احکامات پر بھی غور کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق اجلاس نے طے کیا کہ نااہل ارکان کے خلاف فوجداری مقدمات کا معاملہ صوبائی الیکشن کمشن کو بھیجا جائے ۔ اجلاس میں اکثریتی ارکان کی رائے تھی کہ سینیٹر رحمن ملک کے خلاف کرپٹ پریکٹس الزام میں عوامی نمائندگی ایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے تاہم سندھ سے کمشن کی رکن کی واضح رائے نہ آئی۔