بحیثیت پاکستانی ہماری ذمہ داریاں

25 ستمبر 2012

مکرمی! افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ ہم نوجوانوں کو اجتماعی طور پر جو کردار ادا کرنا چاہئے تھا وہ ادا نہیں کیا جہاں تک ہمارے انفرادی مفادات کا تعلق ہوتا ہے اس کے لئے ہم ہر طرح کی قربانی کے لئے تیار ہوتے ہیں۔ مگر افسوس صد افسوس کہ ہم اپنے سامنے برائیاں ہوتے دیکھتے رہتے ہیں مگر کبھی ان برائیوں کو روکنے کی کوشش نہیں کی اب وہ برائیاں اتنی بڑھ چکی ہیں کہ ہر طرف معاشرے میں کرپشن، بدعنوانی، صوبائیت پرستی، قومیت پرستی، لسانیت پرستی اور فرقہ پرستی کا وائرس اتنا بڑھ چکا ہے کہ اب ہمیں دہشت گردی، بیروزگاری اور ہر طرف افراتفری کے تحفے پے در پے مل رہے ہیں اگر ہم بحیثیت پاکستانی شروع سے ہی ان برائیوں کے خلاف نبردآزما ہوتے تو یقیناً آج پاکستان دنیا کی عظیم ترین اسلامی فلاحی ریاست بن چکا ہوتا۔ آج بھی ہمارے پاس وقت ہے کہ ہم میدان عمل میں نکلیں اور اپنے وطن عزیز کو دنیا کی عظیم ترین اسلامی فلاحی ریاست بنا سکتے ہیں۔ اس کے لئے ضروری ہے کہ ہم سب خصوصاً طالبعلم، نوجوان اور تمام طبقہ فکر کے افراد ایک جھنڈے تلے جمع ہو کر اپنا اپنا کردار ادا کریں۔ (مظہر اقبال چٹھہ کالونی نمبر 1 شرقپور روڈ بیگم کوٹ شاہدرہ لاہور۔ بانی جناح یوتھ فیڈریشن آف پاکستان 0306-4142211)