جماعة الدعوة کے مرکزی رہنما حافظ سیف اللہ منصور ٹریفک حادثے میں جاںبحق

25 اکتوبر 2013

لاہور + مریدکے (خصوصی نامہ نگار + نامہ نگار) پاکستان واٹر موومنٹ کے چیئرمین جماعة الدعوة کے مرکزی رہنما اور تحریک آزادی جموں و کشمیر کے چیئرمین حافظ سیف اللہ منصور موٹروے فیض پور انٹرچینج پر گاڑی الٹنے کے سبب جاںبحق ہو گئے۔ وہ اسلام آباد سے لاہور آ رہے تھے کہ فیض پور انٹرچینج کے قریب ان کی گاڑی کا ٹائر پھٹنے سے حادثہ پیش آ گیا، حادثے میں ان کے سکیورٹی گارڈ اور ڈرائیور شدید زخمی ہو گئے۔ حافظ سیف اللہ منصور جمعرات کی شام 7 بجے مرکز طیبہ مریدکے آتے ہوئے فیض پور انٹرچینج پر گاڑی الٹنے کی وجہ سے جاںبحق ہو گئے۔ مرحوم نے پسماندگان میں 2 بیوگان اور بچے چھوڑے ہیں، مرحوم جہاد افغانستان میں عملاً شریک رہے۔ حافظ سیف اللہ منصور کی نماز جنازہ آج صبح نو بجے مرکز طیبہ مریدکے میں ادا کی جائے گی۔ نماز جنازہ امیر جماعة الدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید پڑھائیں گے۔ حافظ سیف اللہ منصور جماعة الدعوة کے بانی رہنماﺅں اور حافظ محمد سعید کے انتہائی قریبی ساتھیوں میں سے تھے۔ امیر جماعة الدعوة پروفیسر حافظ محمد سعید، سینیٹر ساجد میر، صاحبزادہ حاجی امجد اجمل، حافظ عبدالسلام بن محمد، حافظ عبدالرحمن مکی، پروفیسر ظفر اقبال، حافظ عبدالغفار المدنی، مولانا امیر حمزہ، مولانا شمشاد احمد سلفی، مولانا سیف اللہ خالد، قاری محمد یعقوب شیخ، محمد یحییٰ مجاہد، مولانا ابوالہاشم، حافظ خالد ولید، سربراہ تحریک دعوت توحید میاں محمد جمیل نے حافظ سیف اللہ منصور کی اچانک حادثاتی شہادت پر گہرے رنج و غم کا اظہارکرتے ہوئے ان کیلئے جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام اور ان کے لواحقین کیلئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔