امریکہ بھارت کے اکسانے پر ہمارے خلاف دباﺅ بڑھا رہا ہے‘ ثبوت ہیں تو عدالتوں میں لائیں: حافظ سعید

25 اکتوبر 2013
امریکہ بھارت کے اکسانے پر ہمارے خلاف دباﺅ بڑھا رہا ہے‘ ثبوت ہیں تو عدالتوں میں لائیں: حافظ سعید

اسلام آباد (محمد نواز رضا /وقائع نگار خصوصی) جماعة الدعوة پاکستان کے سربراہ حافظ محمد سعید نے کہا ہے

ڈرون حملوںکے خلاف ملک گیر تحریک چلانے پر امریکہ کی طرف سے نوازشریف کے

دورہ کے دوران جماعةالدعوة کو موضوع بحث بنایا گیا۔ بے گناہ پاکستانیوں کی شہادت،

مسئلہ کشمیر، بلوچستان میں بھارتی مداخلت اور پاکستان میں تخریب کاری و دہشت گردی

کے خلاف بھرپور آواز بلند کرنے پر امریکہ و بھارت کو جماعةالدعوة سے سخت تکلیف ہے۔

بھارت سرکار کے اکسانے پر امریکہ پاکستان پر جماعةالدعوة کے خلاف دباﺅ بڑھا رہا ہے۔

ملکی سلامتی و خودمختاری کے ان ایشوز پر آواز بلند کرتے رہیں گے۔ امریکہ افغانستان سے نکلنے سے قبل بھارت کو خطہ

کا تھانیدار بنانا چاہتا ہے لیکن اس کی یہ سازشیں ان شاءاللہ کامیاب نہیں ہوں گی۔

نوائے وقت سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاجماعة الدعوة شروع دن سے امریکہ کی جانب سے پاکستان میں جاری ڈرون حملوں کے خلاف ہے۔ اس سلسلہ میں اللہ کے فضل وکرم سے دفاع پاکستان کونسل کے نام سے ملک بھر کی مذہبی و سیاسی جماعتوں کا مشترکہ پلیٹ فارم بھی تشکیل دیا گیا اور قریہ قریہ شہر شہر جاکر ڈرون حملوں میں بے گناہ پاکستانیوں کی شہادت کے خلاف عوامی رائے عامہ ہموار کی گئی۔ یہی وجہ ہے نواز شریف کے دورہ امریکہ کے دوران ڈرون حملوں کا معاملہ ایجنڈے میں سرفہرست رہا۔ امریکہ چونکہ سمجھتا ہے دفاع پاکستان کونسل کے پلیٹ فارم سے ڈرون حملوں کے خلاف ملک گیر تحریک میں جماعةالدعوة کا کردار نمایاں رہا لہٰذا اس بات کا امریکیوں کو ہم پر سخت غصہ ہے اور انہیں ہمارا یہ کردار برداشت نہیں ہو رہا۔ انہوں نے کہا جماعةالدعوة نے مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی ریاستی دہشت گردی اور متنازعہ ڈیموں کی تعمیر کے خلاف بھی بھرپور آواز بلند کی۔ پرویز مشرف کی طرف سے نت نئے آپشنز پیش کرنے سے مسئلہ کشمیر پر پاکستان کا موقف کمزور ہوا تو اس عرصہ میں بھی ہم نے مظلوم کشمیر یوں کی جدوجہد آزادی کی کھل کر حمایت کی۔ انڈیا سمجھتا ہے مسئلہ کشمیر کو بھرپور انداز میں اجاگر کرنے اور اس کے مذموم ایجنڈوں کی تکمیل کی راہ میںجماعةالدعوة سب سے بڑی رکاوٹ ہے ۔ اس لئے وہ امریکیوں سے ملاقاتیں کر کے انہیں جماعةالدعوة کے خلاف بھڑکاتے ہیں اور اس حوالہ سے پاکستان پر دباﺅ بڑھانے کے مطالبات کئے جاتے ہیں۔ حافظ محمد سعید نے کہا بھارت و امریکہ نے پاکستان میں تخریب کاری ودہشت گردی کا نیٹ ورک پھیلا رکھا ہے۔ افغانستان میں دہشت گردوں کو تربیت دیکر پاکستان داخل کیا جارہا ہے۔ ملک بھر کے مختلف شہروں میں ہونے والے بم دھماکوں اور خودکش حملوںمیں براہ راست انڈیا ملوث ہے۔ ہم نے عوامی سطح پر انڈیا کے اس گھناﺅنے کردار کو بے نقاب کیا۔ اسی طرح بلوچستان میں بھی بھارت سرکار کی طرف سے علیحدگی کی تحریکیں پروان چڑھائی جارہی ہیں۔ جماعةالدعوة نے حالیہ زلزلہ کے بعد وہاں ریلیف کا کام شروع کیا تو اس سے بھی بھارت و امریکہ کے مفادات پر زد پڑی اور بلوچستان میں پاکستان کے پرچم لہرائے گئے۔ ملکی سلامتی و خودمختاری کے حوالہ سے یہی وہ ہمارا کردار ہے جس سے بھارت و امریکہ تلملا رہے ہیں اور ہمیں اس کام سے روکنا چاہتے ہیں تاکہ وہ یہاں اپنا مذموم ایجنڈا پروان چڑھا سکیں۔ مزید براں نوائے وقت رپورٹ کے مطابق نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ محمد سعید نے کہا ہماری تحریک امریکہ کو پسند نہیں آئی۔ تحریک کے نتیجے میں پوری دنیا میں ڈمون حملوں کا مسئلہ اجاگر ہوا۔ انہوں نے کہا حکمرانوں نے مسئلہ کشمیر پس پشت ڈال دیا ہے۔ امریکہ صرف اپنے مفادات کی سیاست کرتا ہے۔ امریکہ نے پاکستان کی قربانیوں کو یاد نہیں رکھا۔ دہشت گردی کے باعث معیشت تباہ ہو چکی ہے۔ حافظ سعید نے کہا جماعة الدعوة نے ڈرون حملوں کے خلاف تین سال سے آواز اٹھائی۔ یہی وجہ ہے کہ اوباما نے ڈرون حملوں کی بجائے جماعة الدعوة کا ایشو اٹھایا۔ اوباما نے ڈرون حملوں کو سائیڈلائن کر دیا۔ ایک اور سوال پر کہا بھارت نے ممبئی حملوں میں 5 سال میں پاکستان کو کوئی ثبوت نہیں دیئے۔ اوباما نے تحقیق کی بجائے بھارتی الزام تراشی کو لیکر ہمارے خلاف بات کی۔ سپریم کورٹ فیصلہ دے چکی ہے ہم پر الزام ثابت نہیں ہوا۔ ہمارے خلاف کوئی ثبوت ہے تو دہشت گرد کہنے کی بجائے عدالتوں میں لائیں۔