ٹل کو گیس نہ ملنے پر عبدالنبی بنگش سینٹ کمیٹی کی رکنیت سے مستعفی، جہانگیر بدر کا واک آﺅٹ

25 اکتوبر 2013

اسلام آباد (آئی این پی + نوائے وقت نیوز) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے پٹرولیم و قدرتی وسائل کے اجلاس کے دوران وزیراعظم کے تحصیل ٹل کو گیس کی فراہمی کے اعلان پر عملدرآمد نہ کئے جانے پر سینیٹر عبدالنبی بنگش نے کمیٹی کی رکنیت سے استعفیٰ دے دیا جبکہ سینیٹر جہانگیر بدر احتجاجاً اجلاس سے واک آﺅٹ کر گئے‘ سینیٹر عبدالنبی بنگش نے کہا کہ سابق وزیراعظم گیلانی نے جولائی 2011ءمیں تحصیل ٹل کو گیس کی فراہمی کیلئے 90 کروڑ روپے کی گرانٹ کا اعلان کیا تھا مگر بیوروکریسی نے عملدرآمد نہیں ہونے دیا‘ جس کمیٹی کی کوئی ویلیو نہ ہو اس میں بیٹھنے کا کوئی فائدہ نہیں‘ اب تحصیل ٹل کے لوگوں کی قیادت کرکے ٹل بلاک سے گیس کی فراہمی کاٹ دیں گے‘ چیئرمین قائمہ کمیٹی محمد یوسف بلوچ نے کہا کہ بلوچستان میں بھی اسی وجہ سے حالات خراب ہیں کہ سوئی سے گیس نکلتی ہے اور وہاں کے لوگوں کو میسر نہیں‘ ایک معزز ممبر کے استعفیٰ دینے اور دوسرے کے واک آﺅٹ کے بعد قائمہ کمیٹی کا اجلاس جاری نہیں رکھ سکتے‘ وزیر پٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ گیس کنکشن کی سکیورٹی فیس میں اضافے کے حق میں نہیں ہیں۔ کمیٹی کا اجلاس محمد یوسف بلوچ کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاﺅس میں منعقد ہوا۔ ایم ڈی سوئی ناردرن عارف حمید نے اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ اوگرا نے 4ہزار 500 روپے سکیورٹی فیس لینے کی منظوری دیدی۔ سکیورٹی فیس ان صارفین سے لی جائے گی جن کا ماہانہ بل اوسطاً1500 روپے ہے۔ فیس 1500 سے بڑھا کر4 ہزار 500روپے کی گئی ہے۔1500 سے کم بل والے گھریلو صارفین سکیورٹی فیس سے متاثر نہیں ہوںگے۔