کشمیر برصغیر کی سب سے بڑی لیکن پسماندہ ترین ریاست تھی: چیف جسٹس آزاد کشمیر

25 اکتوبر 2013

میرپور (ثناءنیوز) آزاد کشمیر سپریم کورٹ کے چیف جسٹس عدالت عظمیٰ جناب جسٹس محمد اعظم خان نے کہا ہے کہ کبھی ہند اور سندھ اکٹھے نہیں رہے۔ تحریک آزادی ڈوگرہ راج سے ہی اس وقت شروع ہوئی جب انگریزوں نے کشمیر کا بدنام زمانہ 75 لاکھ سکہ کے عوض سودا کر دیا۔ یہ نہ صرف زمین کا سودا تھا بلکہ تمام کشمیری انسانوں کو بھی فروخت کر دیا گیا،کشمیر چونکہ اکثریتی مسلم ریاست تھی اس لئے ہندوستان نے کشمیر پر قبضہ کے لئے اپنی فوجیں اتار دیں جس پر مقامی لوگوں نے جہاد شروع کر دیا۔ 24 اکتوبر کو آزاد کشمیر حکومت قائم کی گئی۔