پاکستان، روس، افغانستان اور تاجکستان نے منشیات سمگلنگ کی روک تھام کیلئے معاہدے پر دستخط کر دیئے

25 اکتوبر 2013

اسلام آباد (آئی این پی) پاکستان، روس، افغانستان اور تاجکستان نے منشیات سمگلنگ کی روک تھام کیلئے معاہدے پر دستخط کر دیئے، منشیات کی روک تھام کے لئے چاروں ممالک کے درمیان سرحدوں پر خفیہ معلومات کے تبادلے اور منشیات سمگلروں کے خلاف مشترکہ آپریشن سمیت جدید ٹیکنالوجی سے مانیٹرنگ کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔ جمعرات کو پاکستان افغانستان، تاجکستان اور روس کی اینٹی ڈرگ ایجنسیز کے سربراہان کا منشیات کی روک تھام کیلئے اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں چاروں ممالک کے درمیان ایم اویوز پر دستخط کئے گئے۔ اجلاس میں افغانستان اینٹی ڈرگ ایجنسی کے سربراہ نے کہا کہ افغانستان کے 17 صوبوں میں منشیات کی پیداوار ختم کردی گئی ہے صرف شورش زدہ 7 صوبوں میں پوست کی کاشت جاری ہے۔ افغان انسداد منشیات ایجنسی نے بین الاقوامی 784 سمگلروں سمیت 3 ہزار سے زائد سمگلرز پکڑے ہیں جبکہ 624 ٹن پوست بھی پکڑی جو کہ کل پیداوار کا 24 فیصد بنتی ہے۔ اجلاس کے بعد مشترکہ اعلامیہ جاری کیا گیا جس کے مطابق چاروں ممالک انسداد منشیات اور سمگلنگ کی روک تھام کیلئے سرحدوں پر خفیہ معلومات کے تبادلے اور منشیات سمگلروں کے خلاف مشترکہ آپریشنز سمیت جدید ٹیکنالوجی سے مانیٹرنگ کریں گے۔ سیکرٹری نارکوٹکس کا کہنا تھا کہ منشیات کی رقم پاکستان میں دہشتگردی کیلئے استعمال ہو رہی ہے، منشیات کی رقم سے دہشت گردوں کیلئے اسلحہ خریدا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ منشیات کے سمگلروں کا کوئی مذہب، خطہ یا ملک نہیں ہوتا۔