ہائیکورٹ نے منظر لطیف میاں کو’’ڈپلیکس‘‘ کمپنی کا نام استعمال کرنے سے روک دیا

25 اکتوبر 2013

لاہور (وقائع نگار خصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس  خالد محمود خاں نے میسرز ڈپلیکس کی ا پیل پر عبور حکم کے ذریعے منظر لطیف میاں کو ایم ایم عالم روڈ اوربیگم پورہ مراکز میں ڈپلیکس کا نام استعمال کرنے سکے روک دیا ہے۔ فاضل عدالت نے ٹرائل کورٹ کو ہدایت کی ہے کہ وہ کافی عرصے سے زیر التوا معاملے کا فیصلہ3 ماہ کے اندر کرے۔ فریقین کے وکلا کے دلائل کے بعد فاضل نے قرار دیا کہ کمپنی آرڈیننس 1984 کے تحت ڈپلیکس کا نام میسرز ڈپلیکس پرائیویٹ لمیٹڈ کی ملکیت ہے جسے کوئی دوسرا استعمال نہیں کر سکتا۔