اسلام سربلندرہتاہے

25 اکتوبر 2013

٭حضرت ابو ذر غفاری رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں،نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ’’یقینا وہ شخص فلاح پاگیا،جس کا دل ایمان میں مخلص ہوگیا اوراس نے اپنے دل کو سلیم الطبع کرلیا،اپنی زبان کو سچ کا عادی بنالیا،اپنے نفس کو مطمئن بنالیا،اپنی گردش حیات کو درست کرلیا، اپنے کانوں کو حق سننے کا عادی بنالیااوراپنی آنکھوں کو عبرت کا نظارہ کرنے والا بنالیا‘‘۔(مسند امام احمد بن حنبل)
٭حضرت ابوسعید خدری رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں ،نبی کریم صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ارشادفرمایا: ’’واہ!۔۔کس قدر خوشی کی بات ہے اُس شخص کے لیے جس نے مجھے دیکھا اورمجھ پر ایمان کی سعادت حاصل کی،لیکن اُس شخص کے لیے کس قدر خوشی کی بات ہے!کس قدر خوشی کی بات ہے!کس قدرخوشی کی بات ہے!(تین بار )جو مجھ پر ایمان لایااس کے باوجود کہ اُس نے مجھے دیکھا نہیں ‘‘۔(مسند امام احمد بن حنبل)
٭حضرت عمر وبن عاص رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں،حضورنبی محتشم صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ارشادفرمایا: ’’کیا تمہیں علم نہیں ہے؟کہ اسلام اپنے سے پہلے کیے گئے بُرے اعمال کومنہدم کردیتا ہے، ہجرت بھی اپنے سے پہلے بُرے اعمال کو مٹا دیتی ہے،اورحج بھی گذشتہ برائیوں کونابود کردیتا ہے۔‘‘ (صحیح مسلم)
٭حضرت ابوذر غفاری رضی اللہ عنہ روایت فرماتے ہیں،رسول کریم صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ارشادفرمایا: ’’اسلام نرم خواورمہربان سواری ہے، لہٰذا اپنے لیے سوار بھی ایسا ہی پسند کرتا ہے۔‘‘ (مسند امام احمد بن حنبل )
٭حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں،حضور اکرم صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ارشادفرمایا: ’’اسلام بڑھتا تو ہے مگر گھٹتا نہیں۔‘‘ (ابودائود،احمد،حاکم)
٭حضرت عائذ بن عمر رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں،نبی کریم صلی اللہ علیہ والہ وسلم نے ارشادفرمایا: ’’اسلام ہمیشہ سربلند رہتا ہے مغلوب نہیں ہوتا۔‘‘(دارقطنی،بیہقی)
پانی کا چشمہ ایک بار تاب وتوانائی سے پھوٹ پڑے تو وہ نرم وگدازاورسنگلاخ زمینوں سے اپنا راستہ بناتا ہوا گزر جاتا ہے،اسلام ایک ازلی وابدی حقیقت ہے فطرت کی صحیح ترین تعبیر ہے اوریہ حقیقت خود کو منواتی ہی رہتی ہے کسی فرد یا قوم کی مزاحمت سے اس کا راستہ رکتا نہیں ہے۔اگر کوئی ایک قوم یا فرد اس کی قبولیت اورخدمت میں تساہل بڑتے تو اللہ تعالیٰ یہ سعادت کسی اورکو عطافرمادیتا ہے۔
ہے عیاں یورش تاتار کے افسانے سے
پاسباں مل گئے کعبے کو صنم خانے سے