بھارت کے خلاف سیریز، پی سی بی نے وزیراعظم کو خط لکھ دیا، بی سی سی نے منافع سے حصہ مانگ لیا، پاکستان کا انکار

25 نومبر 2015

لاہور(سپورٹس رپورٹر+نمائندہ سپورٹس+نیوز ایجنسیاں) پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہریار خان کا کہنا ہے کہ دبئی میں بھارتی کرکٹ بورڈ کے سربراہ ششانک منوہر کے ساتھ جائلز کلارک کی موجودگی میں ہونے والی میٹنگ کے حوالے سے وزیر اعظم پاکستان کو خط لکھ دیا ہے۔ اگلے تین چار روز میں تمام چیزیں فائنل ہو جائیں گی۔ قذافی سٹیڈیم میں میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے کوئی بھی جواب آنے تک کسی بھی بات کا جواب نہیں دے سکتا ہوں۔ میاں نواز شریف کو پاکستان انڈیا سیریز کے حوالے سے خط لکھ دیا ہے میاں نواز شریف خود بھی کرکٹر رہ چکے ہیں جن کے ساتھ میں خود بھی کرکٹ کھیل چکا ہوں۔ انگلش ٹیم کے سابق کپتان مائیکل وان کی جانب سے شوشل میڈیا پر تیسرے ایک روزہ میچ کے حوالے سے دیئے گئے پیغام کا ہم نے جائلز کلارک کی موجودگی میں ان سے گلہ کیا تھا جس کا انہوں نے بھی برا منایا ہے۔ ہم آئی سی سی کو اس پر خط ضرور لکھیں گے۔ ان ا کہنا تھا کہ بھارتی میڈیا میں پاکستان حکومت کی جانب سے آنے والی خبروں جس میں کہا جا رہا ہے کہ حکومت نے گرین سگنل دیدیا ہے مجھے اس بارے میں کوئی پتہ نہیں ہے۔ ایک سوال پر چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ اگر دبئی کی بجائے سری لنکا میں سیریز ہوتی ہے تو وہ یو اے ای سے سستی پڑے گی۔ چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے کوئی بھی جواب آنے تک ہم کوئی بات نہیں کر سکتے ہیں۔ جواب چند روز میں مل جائیگا۔ پاکستان بھارت کرکٹ بورڈ میںثالث کا کردار ادا کرنے والے انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے صدر جائلز کلارک سیریز کا با ضابطہ اعلان ستائیس نومبر کو کریں گے۔ بھارتی کرکٹ بورڈ کی ورکنگ کمیٹی کا اہم اجلاس جمعہ کو شیڈول ہے۔بھارت نے پاکستان کے ساتھ کرکٹ سیریز کھیلنے کی قیمت مانگ لی ہے۔بھارتی کرکٹ بورڈ نے سری لنکا میں سیریز کھیلنے پر رضامندی کے ساتھ ساتھ منافع کی شرط بھی عائد کر دی ہے ،ذرائع کے مطابق جائلز کلارک کی ثالثی میںبھارتسری لنکا میں پاک بھارت سیریز پر رضامندی کا اظہار تو کر دیا تھا لیکن ساتھ ہی اس نے یہ بھی شرط عائد کر دی کہ اسے اس سیریز کا منافع بھی دیا جائے جبکہ پی سی بی کو بھارت کی یہ شرائط منظور نہیں ہیں۔ذرائع کے مطابق پی سی بی کا اصولی موقف ہے کہ سیریز ہماری ہے تو نفع بھارت کو کیوں ملے؟ذرائع کے مطابق بھارتی بورڈکا شرائط عائد کرنے کا مقصد دراصل سیریز کی راہ میں رکاوٹیں عائد کرنا ہے۔واضح رہے کہ جائلز کلارک کی ثالثی کے بعد بھارت سیریز کھیلنے پر تیا ہوا تھا اس سے قبل بھارت یہ سیریز اپنے ملک میں کھیلنا چاہتا تھا لیکن پاکستانی انکار نے بھارت پر دبائو بڑھا دیا تھا،جس پر وہ پاکستان کے ساتھ کھیلنے پر تیار ہوئے۔نجی ٹی وی کے مطابق 27نومبر کو بی سی سی آئی ورکنگ کمیٹی کا اجلاس ہو گا جس میں بھارتی حکام اس ضمن میں مزید مشاورت کے بعد فیصلہ کریں گے۔دریں اثنا پی سی بی نے پاکستانی حکومت سے رابطہ کر کے پوچھ لیا کہ بھارت کے ساتھ کھیلنا ہے یا نہیں۔