کسان پیکیج سنٹر میں دھکم پیل سے ایک کاشتکار جاں بحق‘ رقم نہ ملنے پر دوسرے کی خودکشی

25 نومبر 2015

وہاڑی ( خبر نگار) کسان پیکج سنٹر پر بد نظمی بوڑھا کسان دم توڑ گیا عینی شاہدین کے مطابق سینکڑوں کسان پے آرڈر کی وصولی کے لئے ڈی سی آفس کسان پیکج سنٹر پر موجود تھے لیکن بد نظمی اور دھکم پیل ہونے کی وجہ سے 3 ڈبلیو بی کے رہائشی 62 سالہ کسان شاہ بہرام جو صبح سویرے سے لائن میں کھڑا ہوا تھا گر پڑا کسانوں نے اپنی مدد آپ کے تحت اسے اٹھایا اور باہر سائے میں لے کر آئے کسانوں کی طرف سے ریسکیو 1122کی ٹیم کو کال کی گئی لیکن اس سے پہلے ہی شاہ بہرام اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا ڈاکٹر وں کے مطابق شاہ بہرام کی موت ہارٹ اٹیک کی وجہ سے ہوئی ہے موقع پر موجود کسانوں نے بتایا کہ بوڑھے مرد، خواتین کے لئے پا نی اور بیٹھنے کے کوئی انتظام نہیں ہے اور پٹواری کاشتکاروں سے مبینہ طور پر ہزاروں روپے رشوت لے رہے ہیں جو نہیں دیتا اس کو چکر لگو رہے ہیں بعض پٹواری تو آتے نہیں اور جو آتے ہیں وہ فارغ بیٹھے رہتے ہیں جبکہ کسان سارا دن لائنوں میں کھڑے ذلیل و خوار ہو کر میلوں دور گھروں کو لوٹ جاتے ہیں انتظامیہ کی ہٹ دھرمی اور سہولیات فراہم نہ کرنے کے خلاف کسانوں نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ شہباز شریف انتظامیہ کے بے رحمانہ سلوک سے نجات دلائیں۔

محسن وال (نامہ نگار )کسان پیکج کی رقم نہ ملنے پر پچاس سالہ کاشتکار نے دلبرداشتہ ہو کر ٹرین کے نیچے آکر خود کشی کر لی تفصیل کے مطابق میاں چنوں کے نواحی گاﺅں 90پندرہ ایل کے رہائشی تین ایکڑ کے مالک متوفی کاشتکارکرم الہی کے بھتیجے فلک شیر نے بتایا کہ اس کا چچا کسان پیکج کی رقم لینے کے لئے میاں چنوں آیا لیکن اسٹنٹ کمشنر میاں چنوں کے آفس سے اسے جواب دے دیا گیا ،اور عملہ اس کے ساتھ بدتمیزی کرتے ہوئے ناراوسلوک کیا جس سے دل برداشتہ ہو کر ٹرین کے نیچے آکر خود کشی کر لی ،ذرائع کے مطابق کہ متوفی کرم الہی کا یہ کسان پیکج کی رقم کے حصول کے لئے پانچواں چکرتھا ۔