ارمغانِ حجاز

25 مارچ 2014

ہو تیرے بیاباں کی ہوا تجھ کو گوارا
اس دشت سے بہتر ہے نہ دِلی نہ بخارا
جس سمت میں چاہے صفتِ سَیلِ رواں چل
وادی یہ ہماری ہے‘ وہ صحرا بھی ہمارا
(ارمغانِ حجاز)

ارمغانِ حجاز

غیرت ہے بڑی چیز جہانِ تگ و دو میںپہناتی ہے درویش کو تاجِ سرِ داراحاصل کسی ...

ارمغانِ حجاز

تقدیرِ اُمم کیا ہے‘ کوئی کہہ نہیں سکتامومن کی فراست ہو تو کافی ہے ...