پاکستانی حکومت نے جو کہا وہ ہم نے کیا، کروڑوں ڈالر دیئے ہےں: امریکی سفیر کیمرون منٹر

25 جولائی 2011
اسلام آباد (وقت نیوز) ہم نے وہ سب کیا جو پاکستانی حکومت نے کہا ، دہشت گردی، سیلاب متاثرین سمیت ہر شعبے مےں مدد فراہم کی گئی، اب ہم عام فیصلے کرنا چاہتے ہےں ، جن سے امریکی حکومت پر عوام کا اعتماد بحال ہو۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان مےں امریکی سفیر کیمرون منٹر نے وقت نیوز کے پروگرام مےں کیا۔ پروگرام مےں کیمرون منٹر کی اہلیہ میرلن وائٹ نے بھی شرکت کی۔ میرلن وائٹ نے کہا کہ پاکستان کا دورہ ان کےلئے بہت اہم اور نادر ہے، پاکستان کے لوگ مہمان نواز اور کشادہ ذہن کے مالک ہےں ، ہمیں مل کر سیاسی، معاشی مسائل کا حل نکالنا ہوگا، امریکی حکومت کو پاکستان کی عوام کے ساتھ رابطے بڑھانے کی ضرورت ہے، میرلن وائٹ نے کہا کہ پاکستان کے لوگوں مےں ہم آہنگی پائی جاتی ہے، پاکستان آکر کسی قسم کی مشکل کا سامنا نہیں کرنا پڑا، خواتین کے مسائل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان مےں خواتین پر جنسی تشدد اور خواتین کو بااختیار بنانے کے حوالے سے مختلف پروگرام چلا رہے ہےں ، خواتین کو سمال انڈسٹریز سے لگانے کےلئے مالی امداد دی جا رہی ہے۔ مختلف شعبوں مےں انہیں فعال بنانے کےلئے ٹریننگ دی جا رہی ہے، خواتین کو خاندان ہی نہیں معاشرے کی بھی خدمت کرنی ہوگی، انہوں نے واضح کیا کہ تعلیم کے شعبے مےں وسیع سرمایہ کاری کی ضرورت ہے، اس شعبے کےلئے سب سے زیادہ توجہ دی جا رہی ہے، سیلاب زدہ علاقوں مےں نئے سکول بنائے جا رہے ہےں اور دنیا کا سب سے بڑا سکالر شپ پروگرام شروع کیا گیا ہے، یونیورسٹیز کے طلبا کو سکالرشپ بھی دیئے جا رہے ہےں ، پاکستانی کھانوں کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستانی کھانے بہت پسند ہےں ، لاہوری ناشتہ بہت عزیز ہے لاہوری ناشتہ کھاتے ہوئے ہاتھ نہیں رکتے، کھانا بنانا پسند ہے مگر کھانا کم ہی بناتی ہوں۔ کیمرون منٹر نے کہا کہ پاکستان کو تصویر کے دونوں رخ دنیا کو دکھانے ہونگے۔ ابھی تک صرف مسائل کا رخ دکھایا گیا ہے، تمام مسائل کا حل موجود ہے، ہم مختلف ایشوز پر کام کر رہے ہےں کام کے دوران نکتہ نظر کا اختلاف ہو جاتا ہے، ایک ساتھ کام کر کے ہم ایک دوسرے کے مددگار بن سکتے ہےں ۔ انفرادی سطح پرکام سے مسائل حل نہیں ہونگے، ضرورت اس بات کی ہے کہ حکومت کے ساتھ ساتھ دوسرے اداروں کے ساتھ رابطہ قائم کرنا ہوگا اب تک پاکستانی حکومت نے جو کہا وہ کیا ہے دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ مےں کروڑوں ڈالر دیئے ، سیلاب زدگان کی مدد کےلئے بے تحاشا امداد دی گئی، اب ہم عوام کو ساتھ ملا کر عام فیصلے کرنا چاہتے ہےں تاکہ امریکی حکومت اور کاموں پر پاکستانی عوام کا اعتماد بحال ہو۔ 18ویں ترمیم کے بعد تعلیم کا شعبہ صوبائی حکومتوں کے اختیار مےں آگیا ہے، اس حوالے سے ہماری ذمہ داری مزید بڑھ گئی ہے تعلیم کے شعبے مےں ہم صوبوں کی مزید مدد کر سکتے ہےں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مےں آنے سے پہلے وہ بغداد مےں تعینات تھے جہاں ان کی اہلیہ ساتھ نہیں تھیں، پاکستان کا شکریہ جس نے دونوں میاں بیوی کو ایک بار پھر ملا دیا، پاکستان بہت خوبصورت ملک ہے یہاں مختلف ثقافتوں کے لوگ رہتے ہےں ۔ انہوں نے بتایا کہ ان کی بیٹی کینسر کی مریضہ رہی ہے جس سے پورا خاندان متاثر ہوا لیکن اب وہ بالکل تندرست ہے اس کا علاج کرایا گیا ہے اور وہ نیورسٹی مےں زیر تعلیم ہے۔ بیٹی کے مرض کی وجہ سے ان کے دل مےں لوگوں کی خدمت کا جذبہ اور زیادہ بیدار ہوا۔ اپنی شادی کے حوالے سے کیمرون منٹر نے کہا کہ وہ ایک ہی یونیورسٹی مےں زیر تعلیم تھے دونوں الگ الگ بیٹھ کر مطالعہ کیا کرتے تھے اور پڑھنے کا شوق ہی دونوں کو ایک دوسرے کے قریب کرنے کا سبب بنا، کیمرون منٹر نے بتایا کہ وہ جوانی مےں پیانو بجایا کرتے تھے، اس دوران انہوں نے پیانو بجائی۔ میری لن وائٹ نے بتایا کہ ان کے دو بچے ہےں ایک بیٹا اور ایک بیٹی، دونوں بچے دنیا کے 16ممالک دیکھ چکے ہےں میری لن نے بتایا کہ انہیں اور ان کے شوہر کیمرون کو مطالعے کا بہت شوق ہے، وہ روزانہ مطالعہ کرنے کی عادی ہےں ، انہوں نے پاکستان آتے ہی اردو سیکھنا شروع کر دی اور پانچ ماہ کے عرصہ مےں کافی عبور حاصل کر لیا ہے اس لئے انہوں نے گھر مےں پڑھانے کےلئے ٹیچر رکھی ہوئی ہے۔ میری لن کی ٹیچر نے کہا کہ میری لن نے بہت جلد اردو زبان کو سیکھ لیا ہے، ایک سوال کے جواب مےں امریکی سفیر کی اہلیہ نے بتایا کہ اردو مشکل زبان ہے لیکن وہ لوگوں کے ساتھ زیادہ رابطے رکھنے کےلئے اور بات چیت کرنے کےلئے اردو پوری دلچسپی سے سیکھ رہی ہےں ۔ امریکی سفیر اور ان کی اہلیہ نے بتایا کہ انہیں پاکستانی ثقافت بہت اچھی لگتی ہے یہی وجہ ہے کہ وہ ہر ہفتے اپنے گھر مےں کلچرل پروگرام منعقد کراتے ہےں جہاں پاکستان کے لوک فنکار اور گلوکار فن کا مظاہرہ کرتے ہےں ، پچھلے پروگرام مےں صوفی موسیقی سے لطف اندوز ہوئے۔ امریکی سفیر کا اسلام آباد مےں واقع گھر 1970ءمےں تعمیر ہوا تھا جس مےں ایک خوبصورت باغ، بہترین کچن، ڈائننگ ہال اور خوبصورت بیڈ رومز ہےں ۔ انہوں نے بتایا کہ انہوں نے اپنے گھر مےں پاکستانی فن پارے رکھے ہوئے ہےں جن مےں برتن، نیشنل کالج آف آرٹس کے طلباءکے فن پارے شامل ہےں ۔ دونوں میاں بیوی کو پاکستانی ادب کتابیں اور آرٹ بے حد پسند ہے، ان کا کہنا تھا پاکستان قدرتی وسائل سے مالامال ملک ہے جس کے قدرتی مناظر خوبصورت اور لوگ بے حد محبت کرنے والے اور مہمان نواز ہےں ۔
امریکی سفیر / اہلیہ / انٹرویو