کراچی فائرنگ....راکٹ اور بم حملے‘ 25 ہلاک‘ صدر نے آج اجلاس بلا لیا‘ ڈبل سواری پر پھر پابندی‘ آپریشن مشاورت سے ہو گا : رحمن ملک

25 جولائی 2011
کراچی (کرائم رپورٹر + نامہ نگار + ریڈیو نیوز + وقت نیوز + ایجنسیاں) کراچی میں اتوار کے روز بھی شدید فائرنگ جاری رہی‘ راکٹوں‘ دستی بموں اور مارٹروں سے حملے کئے گئے ‘ 3 سیاسی کارکنوں سمیت مزید 25 افراد ہلاک متعدد زخمی ہو گئے۔ ملیر‘ لانڈھی ‘ داﺅد گوٹھ‘ جعفر طیار سوسائٹی‘ قائداعظم کالونی اور دیگر علاقے میدان جنگ بنے رہے‘ 2 گاڑیاں نذر آتش کر دی گئیں‘ لوگوں میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ تجارتی مراکز بند رہے جبکہ سڑکوں پر پبلک ٹرانسپورٹ غائب رہی‘ رینجرز کے دستے گشت کرتے رہے‘ پولیس اور رینجرز نے متعدد افراد کو گرفتار کرکے متاثرہ علاقوں کا کنٹرول سنبھال لیا ‘ صوبائی حکومت نے ڈبل سواری پر دوبارہ پابندی عائد کر دی۔ صدر آصف زرداری نے کراچی میں امن و امان کی صورتحال پر آج اہم اجلاس طلب کر لیا ۔ رحمن ملک نے کہا ہے کہ ہلاکتیں صوبائی معاملہ ہے‘ حالات کی ذمہ دار تیسری قوت ہے‘ کراچی میں آپریشن نہیں ہو رہا‘ آپریشن ہوا تو متحدہ‘ اے این پی سمیت تمام جماعتوں کی مشاورت سے ہو گا۔ حالات راتوں رات ٹھیک نہیں ہو سکتے‘ تفصیلات کے مطابق گلشن اقبال کی قائد اعظم کالونی میں دو گروپوں کے درمیان تصادم میں ایک شخص ہلاک دو زخمی ہوئے۔ گھاس منڈی میں فائرنگ سے مرتضی سمیت2 افراد مارے گئے‘ جعفر طیار سوسائٹی کے قریب تین مارٹر اور ملیر داﺅد گوٹھ میں دو مارٹر فائر کئے گئے جس سے چند مکانات کو نقصان پہنچا ‘ نارتھ کراچی انڈا موڑ پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے تین افراد کو ہلاک کردیا۔ کھوکھراپار میں متحدہ قومی موومنٹ کے کارکن کو فائرنگ کرکے ہلاک کردیا گیا۔ شدید فائرنگ کے باعث لوگ گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے۔ کاروبار زندگی معطل دوکانیں اور بازار بند ٹریفک کی آمدورفت معطل ۔ سڑکوں پر سناٹا چھاگیا۔ جاں بحق ہونے والے وکیل مختار عباس بخاری کی نماز جنازہ کے موقع پر ابو الحسن اصفہانی روڈ عباس ٹاﺅن میں نامعلوم افراد نے ہوائی فائرنگ کی جس سے نماز جنازہ کے شرکاءمیں خوف و ہراس پھیل گیا اور ان میں اشتعال پھیل گیا اس موقع پر مشتعل افراد نے احتجاج بھی کیا تاہم بعد ازاں رینجرز اور پولیس کی بھاری نفری نے موقع پر پہنچ کر صورتحال پر قابو پالیا۔ ملیر بکرا پیڑی میں دستی بم کے حملے میں دو افراد زخمی ہو گئے۔ ملیر میں مسلح افراد نے پیپلز پارٹی کے رہنما شیر محمد بلوچ کے گھر پر بھی فائرنگ جس کے نتیجے میں اگرچہ کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تاہم فائرنگ سے شیر محمد بلوچ کی کار چھلنی ہوگئی اور گھر کی دیواروں پر بھی گولیاں لگیں۔ بفرزون میں 2 موٹر سائیکلوں پر سوار مسلح ملزموں نے فائرنگ کرکے راحیل، صلاح الدین اور اویس راجہ کو زخمی کردیا جنہیں عباسی شہید ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں تینوں جاں بحق ہوگئے۔ پولیس کے مطابق مقتولین کا تعلق ایک سیاسی جماعت سے تھا۔ لانڈھی 89 میں بھی امن و امان کی صورتحال خراب ہے۔ حکومت سندھ کے مطابق ڈبل سواری کی پابندی غیر معینہ مدت کے لئے ہے۔ میڈیا سے گفتگو میں رحمن ملک نے کہا ہے کہ کراچی میں کوئی آپریشن نہیں ہو رہا‘ تمام سیاسی جماعتوں کو اعتماد میں لے کر کیا جائے گا‘ دشمن اور تیسری قوت عدم استحکام پیدا کرنا چاہتی ہے امن و امان کے قیام کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے جا رہے ہیں‘ اس ضمن میں صدر مملکت نے آج اہم اجلاس طلب کیا ہے‘ کوئی حکومت اپنے خلاف کارروائی نہیں کرتی۔ پاکستان کے دشمن لسانی بنیاد پر فساد کرانا چاہتے ہیں۔ رحمن ملک نے کہا کراچی کے حالات راتوں رات ٹھیک نہیں ہو سکتے‘ وقت لگے گا‘ ٹارگٹ کلنگ میں حکومت یا کوئی وزیر ملوث نہیں۔ صوبائی وزیر قانون محمد ایاز سومرو نے کہا ہے کہ صدر آصف زرداری کی جانب سے دئیے جانے والے ٹاسک کے بعد قائم کی جانے والی کمیٹی آج ایم کیو ایم سے مذاکرات شروع کرے گی‘ ایم کیو ایم کے ساتھ کراچی سمیت سندھ میں امن و امان اور ایم کیو ایم کے ایشوز پر بات کی جائے گی۔