نہ رہے بانس نہ بجے بانسری

25 جولائی 2011
مکرمی! ہر اچھی حکومت اپنے عوام کی فلاح و بہبود کو اولیت دیتی ہے۔ آج بھی دنیا کے کئی غیر مسلم ممالک اسلام کے ”فلاحی ریاست“ کے تصور کی عملی تصویر ہیں مگر بدقسمتی سے ایک مسلم ملک ہوتے ہوئے بھی پاکستان کو آج تک ایسی حکومت میسر نہ آ سکی جو اپنے ملک اور عوام کی خیر خواہ ہوتی ہے۔ موجودہ حکومت نے بدانتظامی کی حد کر دی ہے۔ آئے روز کے منی بجٹ اور کمر توڑ مہنگائی نے عام آدمی کا جینا دوبھر کر دیا ہے۔ غربت کے ہاتھوں ہونے والی خودکشیوں سے ثابت ہوتا ہے یہ غریب کش حکومت ہے۔ روٹی، کپڑا اور مکان کا نعرہ لگا کر اقتدار حاصل کرنے والی حکومت لوگوں کو خودکشی پر مجبور کر رہی ہے تاکہ.... ”نہ رہے بانس نہ بجے بانسری“
(رقیہ ڈاکٹر عبدالرحمان، کہکشاں کالونی فیصل آباد، 041-8726379)