سندھ کابینہ: ذوالفقار مرزا ٹارگٹ کلرز کا ایم کیو ایم سے تعلق ثابت کرنے کیلئے متحرک رہے

25 اگست 2011
کراچی (اے این این) کراچی کی صورتحال کا جائزہ لینے کےلئے وزیراعظم گیلانی کی زیر صدارت سندھ کابینہ کے حالیہ اجلاس کی اندرونی کہانی منظر عام پر آئی ہے جس کے مطابق سینئر صوبائی وزیر ذوالفقار مرزا اجلاس میں متحرک رہے ، ٹارگٹ کلرز کا ایم کیو ایم سے تعلق ثابت کرنے کےلئے دستاویزات اور ریکارڈ شدہ گفتگو وزیراعظم کے سامنے رکھی ، گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد پر کرپشن کے سنگین الزامات عائد کئے ، ذوالفقار مرزا نے انکشاف کیا کہ وہ آئی ایس آئی اے کے سربراہ سے اڑھائی گھنٹے کی ملاقات کرکے یہ ساری دستاویزات انہیں فراہم کرچکے ہیں وفاقی وزیر داخلہ رحمن ملک نے بھی ذوالفقار مرزا کے الزامات کی تائید کی ، وزیراعظم کراچی کے حالات پر برہم دکھائی دیئے۔ نجی ٹی وی کے مطابق اجلاس کی اندرونی کہانی کی تفصیلات اجلاس میں موجود دو صوبائی وزراءنے فراہم کیں جن کے مطابق ذوالفقار مرزا نے ٹارگٹ کلنگ سے متعلق دستاویزات کا پٹارہ وزیراعظم اور کابینہ کے سامنے کھول دیا جن میں گرفتار مبینہ ٹارگٹ کلرز کے مبینہ حلفی بیانات شامل تھے۔ رپورٹ کے مطابق ٹارگٹ کلرز نے اپنا تعلق ایم کیو ایم سے حلفیہ طور پر بتایا تھا۔ ذوالفقار مرزا نے چند اہم دستاویزات بھی وزیراعظم کے سامنے رکھیں جن میں ایک بڑی دستاویز ایک اہم ایجنسی کی جانب سے ٹیپ شدہ گفتگو کا ریکارڈ تھا۔ ذوالفقار مرزا کے انکشافات کے دوران صوبائی کابینہ پر سناٹا چھایا رہا ذوالفقار مرزا نے اس عزم کا بھی اظہار کیا کہ وہ گو تنہا ہیں لیکن جدوجہد جاری رکھیں گے جس پر وزیراعظم نے لقمہ دیا کہ وہ ان کے ساتھ ہیں اس پر کابینہ کے ایک اور وزیر نے اٹھ کر ذوالفقار مرزا سے کہا کہ میں بھی آپ کے ساتھ ہوں۔ ذوالفقار مرزا نے لیاری کے ممکنہ آپریشن کی مخالفت کی۔ اجلاس کے دوسرے حصے میں وفاقی وزیر داخلہ رحمن ملک نے ذوالفقار مرزا کی طرف سے فراہم کی گئی دستاویزات اور الزامات کی تائید کی اور یہ ثابت کرنے کی کوشش کی کہ وہ ایم کیو ایم کے حامی نہیں ہیں۔ اجلاس کے پہلے حصے میں ذوالفقار مرزا نے رحمن ملک کو بھی آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے ایم کیو ایم کی جانبداری کا الزام عائد کیا تھا ۔ رحمن ملک نے یہ بھی انکشاف کیا کہ انہوں نے درجنوں لوگوں کے اغواءاور قتل کے بعد لیاری میں آپریشن کا حکم دیا تھا مگر اس کے باوجوہ یہ آپریشن نہ ہوسکا جس پر صوبائی وزیرداخلہ منظور وسان نے حیرانگی سے کہاکہ وہ اس آپریشن کے بارے میں پہلی بار سن رہے ہیں۔ رحمن ملک نے کہاکہ مجوزہ آپریشن کی پوری اطلاع وزیراعلی سندھ کو پہنچا دی گئی تھی۔ صوبائی کابینہ کے اجلاس میں وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی سخت برہم اور پراعتماد نظر آئے۔
اندرونی کہانی