وفاقی حکومت نے ڈاکٹروں کی تنخواہ میں اضافہ کر دیا ، کیریئر سٹرکچرہیلتھ آرڈیننس جاری

25 اگست 2011
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک/ایجنسیاں) کیریئر سٹرکچر ہیلتھ پرسونل سکیم آرڈیننس 2011ءجاری کر دیا گیا۔ ریگولر ڈاکٹر کی ماہانہ تنخواہ 60 ہزار کر دی گئی‘ سالانہ اضافہ 6 ہزار کیا جائے گا۔ پوسٹ گریجویٹ ٹرینی ڈاکٹروں کی تنخواہ 50 ہزار روپے کر دی گئی پہلے ان کی تنخواہ 18 سے 22 ہزار تھی۔ نان پریکٹسنگ الاﺅنس 20 ہزار سے 80 ہزار روپے ماہانہ دیا جائے گا۔ میڈیکل افسر کی ماہانہ تنخواہ 60 ہزار روپے کر دی گئی ہے۔ میڈیکل افسر کی تنخواہ میں سالانہ 6 ہزار روپے اضافہ کیا جائے گا۔ صدر نے آرڈیننس وزیراعظم کے مشورے سے جاری کیا۔ ثناءنیوز کے مطابق وفاقی حکومت کے زیر اہتمام ہسپتالوں کے ڈاکٹروں اور طب کے شعبے سے وابستہ تمام میڈیکل اور نان میڈیکل سٹاف کے لئے نئے سروس سٹرکچر کی منظوری دے دی گئی ہے۔ وزیراعظم نے ڈاکٹروں کے سروس سٹرکچر کو بہتر بنانے کا اعلان قومی اسمبلی میں کیا تھا۔ این این آئی کے مطابق نیا سٹرکچر وفاق کے تحت کام کرنے والے طبی اداروں اور متعلقہ تنظیموں پر لاگو ہو گا‘ طبی شعبے میں کام کرنے و الے افراد کو تیس روز کے اندر موجود پے اینڈ سروس سٹرکچر کے تحت کام جاری رکھنے یا نئی سکیم اختیار کرنے کا حق حاصل ہو گا تاہم نئی تقرریاں نئی سکیم کے تحت ہی عمل میں لائی جائیں گی۔ میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے صدر کے ترجمان فرحت اللہ بابر نے بتایا کہ آرڈیننس کے اجرا سے میڈیکل پریکٹیشنرز کا دیرینہ مطالبہ پورا ہو گیا ہے۔ اس کا اطلاق وفاقی حکومت کے تحت کام کرنے والے ڈاکٹرز پر ہو گا تاہم صوبے اسے ایک ماڈل کے طور پر اپنا سکتے ہیں۔
آرڈیننس جاری