شرح سود 5.75 فیصد برقرار، سی پیک سے بہتری آئی سرمایہ کاری بڑھی، مہنگائی کم ہو گی: مانیٹری پالیسی

24 نومبر 2017 (21:49)

 سٹیٹ بنک آف پاکستان نے دو ماہ کیلئے مانیٹری پالیسی کا اعلان کر دیا۔ سٹیٹ بنک نے شرح سود 5.75 فیصد پر برقرار رکھنے کا اعلان کیا ہے۔ معاشی نمو 6 فیصد رہنے کے امکانات بڑھ گئے۔ مہنگائی میں اضافے کی شرح سالانہ 6 فیصد ہدف سے کم رہنے کی توقع ہے۔ مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں ایف بی آر کے ٹیکس محاصل میں 22 فیصد اضافہ حوصلہ افزا ہے۔ قلیل مدت میں ادائیگیوں کا توازن چیلنج رہے گا۔ برآمدات، بیرونی سرمایہ کاری اور دیگر ذرائع سے رقوم کی ادائیگیوں کے دباﺅ کو کم کرے گا۔ سی پیک منصوبہ مزید بہتری لا رہا ہے۔ امن و امان اور توانائی کی بہتری ہوئی، سپلائی سے سرمایہ کاری بڑھ رہی ہے۔ بجٹ فنانسنگ کیلئے حکومت مرکزی بنک کے ساتھ شیڈول بنکوں سے قرض لے رہی ہے۔ رواں مالی سال چار ماہ میں کرنٹ اکاﺅنٹ خسارہ 5 ارب ڈالر رہا۔ ریگولیٹری ڈیوٹی متعارف کرانے سے درآمدات کی نمو کم ہو گی۔