حا فظ سعید کی رہائی پر تشویش، گرفتاری یقینی بنا کر جرائم کی سزا دی جائے، امریکہ، بھارت کی چیخ و پکار؛ حافظ سعید کا دہشتگردی اور تخریب کاری سے کوئی تعلق نہیں : ترجمان الدعوہ

24 نومبر 2017 (21:29)

مریکہ نے حافظ سعید کی نظربندی سے رہائی پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔ امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان ہیتھر نوئرٹ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ لشکرِ طیبہ ایک نامزد غیر ملکی دہشت گرد تنظیم ہے جو دہشت گرد حملوں میں سینکڑوں معصوم شہریوں، جن میں متعدد امریکی باشندے بھی شامل ہیں، کی ہلاکت کی ذمہ دار ہے۔ پاکستانی حکومت اِس بات کو یقینی بنائے کہ حافظ سعید کو گرفتار کر کے انہیں انکے جرائم کی سزا دی جائے۔ امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان کا بیان اسلام آباد میں امریکی سفارت خانے سے بھی جاری کیاگیا ۔ امریکی محکمہ خزانہ نے مئی 2008 میں ایگزیکٹو آرڈر 13224 کے تحت حافظ سعید کا نام خصوصی طور پر نامزد عالمی دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کیا تھا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ نومبر 2008ءکے ممبئی حملوں کے بعد جس میں چھ امریکی شہری ہلاک ہوئے تھے، اقوامِ متحدہ نے دسمبر 2008ءمیں یو این ایس سی آر 1267 کے تحت حافظ سعید کو انفرادی طور پر بھی دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کرلیا تھا۔ امریکہ کا کہنا ہے کہ لشکر طیبہ اور ا±س کی فرنٹ تنظیموں، رہنماو¿ں اور کارکنوں پر امریکی محکمہ خارجہ اور محکمہ خزانہ کی پابندیاں عائد ہیں۔ علاوہ ازیں اقوام متحدہ کی جانب سے دہشت گرد قرار دیئے جانے والے حافظ سعید کو پاکستانی حکام کی جانب سے رہا کیے جانے پر بھارت نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ پاکستان ایک دہشت گرد کو ملک کے مرکزی دھارے میں لانے کی کوشش کر رہا ہے۔ بھارتی اخبار کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ حافظ سعید کی رہائی اس بات کا ثبوت ہے کہ پاکستان دہشت گردی کے مجرموں کے ساتھ انصاف نہیں کرنا چاہتا۔ دفتر خارجہ کے ترجمان رویش کمار کا کہنا تھا کہ پاکستان نے خود اعتراف کرنے والے اور اقوام متحدہ کی جانب سے دہشت گرد قرار دیئے جانے والے شخص کو رہا کر کے بھارت کی تذلیل کی ہے۔

حافظ  سعید کا دہشتگردی اور تخریب کاری سے کوئی تعلق نہیں : ترجمان الدعوہ 
دوسری طرف  جماعت الدعوہ پاکستان کے ترجمان یحیی مجاہد نے حافظ محمد سعید کی نظربندی کے خاتمے کے حوالہ سے امریکی تشویش پر اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ حافظ محمد سعید امن کے داعی اور خدمت انسانیت کے علمبردار ہیں۔ ان کا دہشتگردی اور تخریب کاری سے کوئی تعلق نہیں۔ پاکستان کی عدالتیں آزاد اور خود مختار ہیں ان کے فیصلوں پر تشویش کا اظہار پاکستان کے اندرونی معاملات پر مداخلت ہے۔ حافظ محمد سعید نے ممبئی حملوں کی مذمت اور تردید کی تھی۔ امریکا کی جانب سے حافظ محمد سعید کیخلاف ثبوت جمع کرنے کے لیے 10 ملین ڈالر کی خطیر رقم کے انعام کا اعلان کیا تھا مگر گزشتہ 5 سال سے حافظ محمد سعید کیخلاف کوئی ثبوت امریکا کو نہیں مل سکا۔ اس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ حافظ محمد سعید امن کے داعی ہیں ان کا دہشتگردی اور تخریب کاری سے کبھی کوئی تعلق نہیں ریا۔