سینیٹ کی فنکشنل کمیٹی انسانی حقوق نے گرہ مٹ میں بچی کی بے حرمتی کا نوٹس لے لیا

24 نومبر 2017

اسلام آباد (صباح نیوز) سینیٹ کی فنکشنل کمیٹی برائے انسانی حقوق نے ڈیرہ اسماعیل خان کے دیہی علاقہ گرہ مٹ میں بچی کی بے حرمتی کے واقعہ کا ازخود نوٹس لے لیا۔ چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا اور آئی جی پی کو 6 دسمبر کو کمیٹی اجلاس میں طلب کر لیا گیا۔ پولیس اور انتظامیہ کے اعلیٰ ترین افسران کو واقعہ کی تفصیلات سے آگاہ کرنے، متاثرہ بچی اور اس کے خاندان کی حفاظت اور انہیں انصاف کی فراہمی کے سلسلے میں اٹھائے گئے اقدامات سے کمیٹی کو آگاہ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ متذکرہ واقعہ پر کمیٹی اجلاس کے لئے گذشتہ روز ایجنڈا جاری کر دیا گیا ہے۔ اجلاس 6 دسمبر کو یہاں چیئرپرسن فنکشنل کمیٹی انسانی حقوق سینیٹر نسرین جلیل کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاؤس میں ہو گا۔ متذکرہ انسانیت سوز واقعہ کے حوالے سے کمیٹی اپنی سفارشات کا اعلان کرے گی۔ یاد رہے کہ ایک یتیم بچی کے ساتھ یہ انسانیت سوز واقعہ گذشتہ ماہ 28 اکتوبر کو پیش آیا تھا۔ مختلف جماعتوں کی طرف سے اس واقعہ کے خلاف احتجاج بھی کیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق چیف سیکرٹری اور آئی جی پی خیبرپختونخوا کو واقعہ کی تمام تر تفصیلات اور متاثرہ خاندان کو انصاف کی فراہمی اس کی حفاظت کے لئے اقدامات سے آگاہ کرنے کے بارے میں کہا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق متذکرہ واقعہ کے حوالے سے انتظامیہ و پولیس کی جوابدہی سے متعلق بھی کمیٹی جائزہ لے گی۔ کمیٹی کا دو روزہ اجلاس ہو گا۔ منڈی بہاؤ الدین میں ایک بچی کو جلائے جانے کے واقعہ پر بھی پنجاب حکومت سے رپورٹ طلب کر لی گئی ہے جبکہ سیکرٹری داخلہ بلوچستان کو صوبے میں لاپتہ افراد کے مسئلے پر طلب کیا گیا ہے۔ سانحہ تربت بلوچستان پر بریفنگ کی ہدایت بھی کر دی گئی ہے۔ 6 اور 7 دسمبر کو دو روزہ اجلاس کی کارروائی کے دوران قومی کمیشن برائے حیثیت خواتین کی کارکردگی اور نیشنل کمیشن برائے انسانی حقوق کی مالی مشکلات کا جائزہ بھی لیا جائے گا۔