پاک بحریہ نے سمندرمیںزخمی ماہی گیروں کو فوری طبی امداد فراہم کردی

24 نومبر 2017

کراچی ( اسٹاف رپورٹر)گوادرکے ساحل سے 280 میل کے فاصلے پر سمندر میں موجود پاکستان کی ماہی گیر کشتی الشہسارنے پاکستان نیوی سے جوائنٹ میری ٹائم انفارمیشن اینڈ کوارڈی نیشن سنٹر کے ذریعے فوری طبی امداد کی فراہمی کی درخواست کی ۔ اس کشتی میں سترہ ماہی گیر سوار تھے۔ پاک بحریہ نے فوری ردِ عمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے ماہی گیروں کی مدد کے لئے اپنے بحری جہاز پی این ایس عالمگیر کو طبی امداد کی فراہمی کا کام سونپا۔پی این ایس عالمگیر نے ماہی گیر کشتی الشہسار سے رابطہ کیا اور زخمی ماہی گیروںکو بشمول ایک ماہی گیر جس کی ٹخنے کی ہڈی ٹوٹ چکی تھی طبی امداد فراہم کی۔ دیگر ماہی گیروں کا بھی معائنہ کیا گیا اورانہیں ضروری طبی امداد فراہم کی گئی۔الشہسار کے عملے نے فوری ردِ عمل اور طبی امداد کی فراہمی کو سراہا جو پاک بحریہ کی درخشاں روایت کے سلسلے کی ایک کڑی ہے۔بحری افواج اپنی فوری نقل و حمل ، رسائی،ثابت قدمی اور ہیلی کاپٹر کے ذریعے گہرے پانیوں سے انسانی جانوں کو بچانا جیسی انفرادی خصوصیات کی بنا پر انسانی ہمدردی کے آپریشنز میں بہت ہی کار آمد ہیں۔ پاک بحریہ زمانہ امن و جنگ دونوں میںعسکری، پولیس سے متعلقہ، سفارتی اور انسانی ہمدردی کے آپریشنز سر انجام دینے کے لئے اپنی تیاریوں کا اعلیٰ معیار برقرار رکھتی ہے۔