مصائب کے خاتمے کیلئے اسوہ محمدؐ و آل محمد کی پیروی کرنا ہوگی

24 نومبر 2017

راولپنڈی (نیوز رپورٹر)قائد ملتِ جعفریہ آغا سیدحامدعلی شاہ موسوی کے اعلان کے مطابق شہادت حضرت امام حسن عسکری ؑ اور ایام عزا کے الوداع کے سلسلے میں ہفتہ عہد و پیمان کی مجالس اور ماتمی جلوسوں کا سلسلہ جمعرات کو بھی جاری رہا۔ مذہبی و ماتمی تنظیموں اور دینی اداروں کی جانب سے مجالس و ماتمداری کا انعقاد کیاگیا۔متولی امام بارہ گاہ دربار سخی شاہ پیارا کاظمی المشہدی چوہڑ ہڑپال سید قاسم علی شاہ کاظمی کے زیراہتمام مجلس عسکری سے خطاب کرتے ہوئے علامہ سید مطلوب حسین تقی نے کہا کہ آج حسینیت کا چرچا شرق و غرب اور جنوب و شمال میں ہے یہی عزاداری ہے اور مجالس و جلوس ہائے ماتم ہر دور کے ظلم و ظالم کے خلاف ابدی احتجاج ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج بھی اگر دنیا اپنے مصائب و آلام کا خاتمہ چاہتی ہے اور صحیح معنوں میں خوشحالی و عوامی فلاح کی خواہاں ہے تو اسے اسوہ محمد و آل محمد ؐ کی عملی پیروی کرنی ہوگی ۔قصر ابو طالب میں مجلس ہفتہ عہد و پیمان سے خطاب کرتے ہوئے علامہ محسن ہمدانی نے کہا کہ میلاد النبی ؐ و عزاداری استعماری قوتوں کے خلاف موثر ترین عالمگیر احتجاج ہے لہذا تمام سنی شیعہ بھائی ایام عزا کی طرح میلا النبی ؐ کے موقع پر بھی باہمی اتحاد و یگانگت کا عملی مظاہرہ کرکے دشمنانِ دین کی شرارت کو مل جل کر ناکام کردیں گے۔سید قمرزیدی نے یہ بات زوردیکر کہی کہ دہشتگردی کے قلع قمع کیلئے پوری قوم افواج پاکستان کی پشت پر کھڑی ہے ۔انہوں نے کہا کہ قائد ملت جعفریہ آغاسیدحامدعلی شاہ موسوی کے ضابطہ عزاداری کے مطابق آٹھ ربیع الاول تک غم حسین ؑ کو ترجیح دیتے ہوئے عزاداری کے پروگرام جاری رہیں گے۔