ہمارے لاہور آفس پر محسن شاہ نواز نے قبضہ کرلیا: شیخ رشید‘ الزام ناجائز ہے: وزیر مملکت

24 نومبر 2017

لاہور (خصوصی رپورٹر) سرگودھا کے پرانے سیاستدان غلام دستگیر لک کے ڈیوس روڈ پر پلازہ کے گرائونڈ فلور کے ایک دفتر پر عوامی مسلم لیگ کے عہدیداران کی طرف سے کرایہ کی ادائیگی بند کرکے دفتر کو تالا لگانے کا معاملہ سیاسی رنگ اختیار کرگیا ہے۔ عوامی مسلم لیگ کے مقامی رہنماء میاں عبدالقدیر نے شیخ رشید احمد کی جانب سے عوامی مسلم لیگ کا دفتر بنانے کیلئے دفتر کرائے پر لیا تھا تاہم پچھلے برس سے کرائے کی ادائیگی کا جھگڑا پیدا ہوگیا اور پچھلے لگ بھگ چھ ماہ سے دفتر بند ہوچکا تھا جبکہ مقامی سول عدالت کے جج کے پاس کرایہ نہ دینے ااور اس پر غیرقانونی قبضہ کا مقدمہ چل رہا تھا۔ فاضل عدالت نے شیخ رشید کو طلب کیا تھا لیکن وہ پیش نہیں ہورہے تھے۔ ذرائع نے بتایا مالک نے دفتر سے فرنیچر نکال کر باہر رکھ دیا جسے عوامی مسلم لیگ کے مقامی عہدیدار لے گئے۔ تاہم عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے سرگودھا ہی کے رکن قومی اسمبلی اور وزیر مملکت بیرسٹر محسن شاہ نواز رانجھا کو اس معاملے میں گھسیٹ لیا ہے۔ شیخ رشید اے نے کہا مجھے ڈیوس ہائٹس کے منیجر ملک اشرف نے محسن شاہ نواز رانجھا سے رابطہ کرنے کیلئے کہا ہے لیکن وہ فون نہیں اٹھا رہے۔ شیخ رشید نے کہا وہ آٹھ سال سے کرایہ دے رہے ہیں‘ 2 لاکھ روپے ایڈوانس دیا تھا لیکن پلازہ کے منیجر نے دفتر کو تالا لگا دیا ہے۔ اس ضمن میں شیخ رشید کی طرف سے تھانہ ریس کورس میں درخواست بھی دی گئی۔ محسن شاہ نواز رانجھا نے شیخ رشید کے الزام کے بارے میں کہا ہے انہوں نے مجھ پر ناجائز الزام لگایا ہے۔ نوائے وقت رپورٹ‘ اے این این‘ این این آئی کے مطابق شیخ رشید نے کہا ہے عوامی مسلم لیگ کے لاہور میں دفتر پر وزیر مملکت محسن شاہ نواز رانجھا نے قبضہ کرلیا ہے۔