معاشرے میں قیام امن کیلئے قانون کی حکمرانی ضروری ہے: ڈاکٹر طاہر امین

24 نومبر 2017

ملتان (نمائندہ نوائے وقت)وائس چانسلر بہاء الدین زکریایونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر طاہر امین نے کہا ہے کہ معاشرہ میں امن کے قیام کے لیے قانون کی حکمرانی ضروری ہے۔ اسلام نے ہمیشہ مثبت سوچ کو فروغ دیا ہے۔ اور خواتین کو اعلیٰ مقام دے کر معاشرے کا معزز رکن بنایا۔ وقت کا تقاضا ہے کہ خواتین کو بھی اپنے حقوق سے آگاہ ہونا چاہیے۔ تاکہ وہ معاشرے کی ترقی میں اپنا بھرپور کردار ادا کرسکیں ۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار بہاء الدین زکریایونیورسٹی کے شعبہ سوشیالوجی کے زیراہتمام انٹرنیشنل کانفرنس برائے ’’صنفی امتیاز ، انسانی حقوق اور اسلام ‘‘ کی افتتاحی تقریب کے موقع پر کیا۔ تقریب میںپروفیسر ڈاکٹر انیتہ ڈیپارٹمنٹ آف انٹرنیشنل سٹڈیز یونیورسٹی آف اوریگن امریکہ ، پروفیسر ڈاکٹر منصور اکبر کندی انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی اسلام آباد ، ڈاکٹر نورین نصیر یونیورسٹی آف پشاور ، پروفیسر ڈاکٹر جاوید حیدر ، ڈاکٹر حضر اللہ انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی اسلام آباد ، ڈاکٹر امتیاز وڑائچ ، ڈاکٹر کامران اشفاق ، صائمہ افضل اور دیگر محققین و اساتذہ کرام موجود تھے۔وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر طاہر امین نے کہا کہ انٹرنیشنل کانفرنسز کا انعقاد ایک اہم پیش رفت ہے۔ اس سے ہمیں بین الاقوامی سطح پر ہونے والی تحقیقات کے بارے میں علم ہوتا ہے۔ اور ہم اپنے مقامی مسائل بھی حل کرنے کے لیے ان تحقیقات کا سہارا لے سکتے ہیں۔ وائس چانسلر نے مزید کہاکہ اگر ہم پانچ چیزوں قانون کی حکمرانی و عملداری ، اسلامی جمہوری کلچر کا استحکام ، انصاف کی عملداری ، اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی و خود مختاری اور فارن پالیسی کے اندر مناسب تبدیلی پر عملدرآمد کو یقینی بنالیں تو ہمارے بہت سارے مسائل حل ہوسکتے ہیںتقریب کے آخر میں وائس چانسلر ڈاکٹر طاہر امین نے محققین اور کانفرنس کے آرگنائزرز میں شیلڈز تقسیم کیں۔