قدیر خان بلاک ختم کرنے پرمتاثرہ وکلاء کی رٹ‘ عدالت کا قرعہ اندازی روکنے کا حکم‘ کچہری منتقلی کیخلاف احتجاج بھی جاری

24 نومبر 2017

ملتان (سپیشل رپورٹر)ڈسٹرکٹ بارایسوسی ایشن ملتان کی جانب سے نیو جوڈیشل کمپلیکس میں وکلاء کو چیمبروں کی الاٹمنٹ کردی گئی جبکہ تعمیرکے لئے ملک ریاض سے بھی رجوع کرلیاگیا ہے اور عدالت کی جانب سے قرعہ اندازی روکنے کاحکم بھی جاری کردیاگیاہے جبکہ وکلاء کا احتجاج بھی جاری ہے۔تفصیل کے مطابق گزشتہ روز ڈسٹرکٹ بارایسوسی ایشن ملتان کی جانب سے ضلع کچہری بارروم میں وکلاء کو نیو جوڈیشل کمپلیکس میں چیمبروں کی الاٹمنٹ کی تقریب منعقد کی گئی تقریب کے آغازمیں جنرل سیکرٹری ڈسٹرکٹ بارسید انیس مہدی اورچیمبروں کی الاٹمنٹ کمیٹی کے ممبر آصف رشیدسیال نے خطا ب کرتے ہوئے کہاکہ کمیٹی کی جانب سے نیو جوڈیشل کمپلیکس میں وکلاء کے چیمبروں کے لئے الاٹ کردہ زمین کے گراؤنڈ فلورپر 12*12 کے 1217 چیمبرتعمیرکرنے کا نقشہ تیارکیاگیاہے نیز ان چیمبروں میں 6،6 فٹ کے راستے بھی رکھے گئے ہیں جبکہ 2 کنٹینر ،میٹنگ ہال،واش رومزبلاکس اوردفاتربھی رکھے گئے ہیں اوروکلاء کو آج سے الاٹمنٹ لیٹرزبھی تقسیم ہونا شروع کردئیے جائیںگے اس ضمن میں وکلاء کوہدایت کی گئی ہے کہ چیمبروں کی جگہ کا پانی سوکھنے کے بعدالاٹمنٹ کمیٹی کی جانب سے چیمبروں کے نمبروں کے مطابق نشانات لگادئیے جائیں گے لیکن وکلاء انھیں تعمیر نہیں کریں گے کیونکہ چیمبروں کی جگہ کو3 منزلہ تعمیر کیاجانا ہے ا س لئے گراؤنڈ فلورزکو مظبوط بنایاجائے گا جس کے لئے گورنرپنجاب سے بھی رقم دینے کی درخواست کی گئی ہے نیزبحریہ ٹاؤن کے ملک ریاض سے بھی چیمبروں کے لئے رقم دینے کے لئے رابطہ کیاگیاہے۔اس موقع پر صدرڈسٹرکٹ بارمحمدیوسف زبیراورنائب صدرعبدالستار ملک کی جانب سے پروجیکٹرپر وکلاء کو چیمبروں کے بارے میں بریفنگ بھی دی گئی ہے۔ آخر میں سینئرممبرمحمدحسین جہانیہ نے کمپیوٹرکا بٹن دباکرقرعہ اندازی کی اورالاٹمنٹ فہرستیں بار میں مختلف جگہوں پر آویزاں کردی گئیں جن کی وکلاء اپنے موبائل کے ذریعے تصاویر بناتے رہے نیز اجلاس میں رش کے باعث ہنگامہ خیزی رہی ہے دریں اثناء وکلاء سید ذاکرنقوی ،سرفرازاحمدقریشی ،عمران احمد جانگلہ اورساجدہ پروین نے دعویٰ استقرارِحق دائر کیاکہ انہیں نیو جوڈیشل کمپلیکس میں ڈاکٹر عبدالقدیرخان بلاک میں ڈسٹرکٹ بارکی جانب سے چیمبر الاٹ کئے گئے ہیں اوراب مذکورہ بلاک ختم کرکے الاٹمنٹ منسوخ کی جارہی ہے جبکہ بار انھیں نیوجوڈیشل کمپلیکس میں چیمبرالاٹ کرنے کی مجازہے اس لئے کمپلیکس میں عبدالقدیر بلاک تعمیر کرکے انھیں چیمبرالاٹ کرنے کے ساتھ قبضہ بھی دیاجائے اورالاٹمنٹ سے روکنے کاحکم دیاجائے جس پر سول جج ندیم اصغرندیم نے ڈسٹرکٹ بارکو آئندہ احکامات تک قرعہ اندازی کرنے سے روکنے کاحکم دیتے ہوئے 28 نومبرکوجواب پیش کرنے کی ہدایت بھی کی ہے دریں اثناء وکلاء کی جانب سے ضلع کچہری سے عدالتوں کی نیوجوڈیشل کمپلیکس منتقلی کے خلاف گزشتہ روزبھی صدرہائیکورٹ بارشیرزمان قریشی کی قیادت میں دھرنادیاگیا۔