الحدیدہ کی بندرگاہ اور صنعا کا ہوائی اڈا کھولنے کا اعلان

24 نومبر 2017

صنعائ(این این آئی)یمن میں عرب اتحاد نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار داد نمبر 2216 پر عمل درآمد کرتے ہوئے الحدیدہ کی بند رگاہ اور صنعا کا بین الاقوامی ہوائی اڈا کھولنے کا اعلان کیا ہے۔ ایک بیان میں کہا سلامتی کونسل کی اس قرارداد کے تحت حوثی ملیشیا اور ان کے حامیوں کو ہتھیار اور فوجی سازوسامان مہیا کرنے پر پابندی عائد ہے۔وہ ان ہتھیاروں کے ذریعے یمن میں اپنی فوجی کارروائیوں کو جاری رکھے ہوئے ہیں۔انھوں نے اسی ماہ ایران سے حاصل کردہ ایک بیلسٹک میزائل سعودی عرب کے دارالحکومت الریاض کی جانب داغا تھا لیکن اس کو سعودی عرب کے میزائل دفاعی نظام نے فضا ہی میں ناکارہ بنا دیا تھا۔سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد نے اپنے بیان میں مزید بتایا کہ ابتدائی جائزے کے بعد الحدیدہ کی بندرگاہ ہنگامی انسانی امداد اور سامان کی وصولی کے لیے کھولی جارہی ہے اور صنعا کا ہوائی اڈا بھی اقوام متحدہ کے انسانی امداد کے لیے مختص طیاروں کے لیے کھولا جارہا ہے ۔اتحاد نے حوثی ملیشیا کی کارروائیوں کے نتیجے میں مختلف مسائل و مصائب کا شکار ہونے والے یمنیوں کی امداد کے لیے بہت جلد ایک جامع منصوبہ شروع کرنے کا بھی اعلان کیا ہے۔ اس کے تحت یمن کی تمام گورنریوں میں امدادی خوراک بھی مہیا کی جائے گی۔عرب اتحاد کی کمان نے اقوام متحدہ سے ماہرین کی ایک ٹیم یمن بھیجنے کے مطالبے کا اعادہ کیا تاکہ یہ ٹیم اتحاد کے ماہرین کے ساتھ مل کر اقوام متحدہ کے معائنے اور تصدیق کے نظام کو مزید بہتر بنایا جائے ۔اس کے دائرہ کار کو بڑھایا جاسکے اور امدادی خوراک اور سامان لے کر آنے والے جہازوں کے یمن میں داخلے کو یقینی بنایا جاسکے۔اس کے علاوہ اس امدادی سامان کو حوثی ملیشیا کے ہاتھ لگنے اور اس کو سامان کے پردے میں ایرانی ساختہ میزائل جنگ زدہ ملک میں اسمگل کرنے سے روکا جاسکے۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...