سری لنکا کرکٹ ٹیم کادورہ پاکستان میں بھارت رکاوٹ

24 نومبر 2017

لاہور( حافظ محمد عمران/ نمائندہ سپورٹس) سیالکوٹ ریجنل کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے گورننگ بورڈ کے رکن نعمان بٹ نے دعوی کیا ہے کہ بھارت نے سری لنکا کی کرکٹ ٹیم کو پاکستان کے دورے سے روکنے کے لیے تمام حربے استعمال کیے لیکن یہ پی سی بی کے چئیرمین نجم سیٹھی کی قائدانہ صلاحیتوں کا کمال ہے کہ انہوں نے بھارت کے منفی ہتھکنڈوں کا توڑ کرتے ہوئے سری لنکا کی ٹیم کو دورہ پاکستان کے لیے قائل کیا۔ وہ وقت نیوز کے پروگرام گیم بیٹ میں گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کا سری لنکا اور بنگہ دیش میں بڑا اثر رسوخ ہے اور ہمارا ہمسایہ ملک آج بھی پاکستان کرکٹ کے خلاف سازشیں کر رہا ہے۔ بھارت نہیں چاہتا کہ پاکستان میں کھیل کے میدان آباد ہوں وہ آج بھی ہمیں بین الاقوامی کرکٹ سے محروم اور پاکستان کو تنہا کرنے کے لیے کوششیں کر رہا ہے۔ نعمان بٹ کا کہنا تھا کہ سری لنکا ایک ٹونٹی ٹونٹی میچ کھیلنے کے لیے لاہور آنا پاکستان دشمنوں کو ایک آنکھ نہیں بھایا۔ عالمی الیون اور سری لنکا کے دورہ پاکستان کا کریڈٹ پی سی بی کے چئیرمین نجم سیٹھی کو جاتا ہے وہ حقیقی معنوں میں ایک مرد بحران کے طور پر سامنے آئے اور دو بڑے ایونٹس کا انعقاد یقینی بنایا۔ وہ ہر محاذ پر بھارت کو شکست دیں گے۔ حکومت پاکستان اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی خدمات بھی پوشیدہ نہیں ہیں لیکن کرکٹ بورڈز اور غیر ملکی کھلاڑیوں کو قائل کرنے کا سب سے اہم اور بنیادی کام نجم سیٹھی نے کیا ہے۔ میں ورلڈ الیون کے کھلاڑیوں، آئی سی سی اور سری لنکن کرکٹ بورڈ انکی انتظامیہ اور کھلاڑیوں کا بھی مشکور ہوں جنہوں نے اس مشکل وقت میں پاکستان کرکٹ کا ساتھ دیا ہے۔ پاکستان میں غیر ملکی کھلاڑیوں کی آمد سے بیرونی دنیا ہے ہمارا رابطہ بحال ہوا ہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ آئندہ بھی اسی عزم کے ساتھ کام کرتا رہے گا۔ ہمارا وڑن ملک میں کھیلوں کے ویران میدانوں کو آباد کرنا اور نوجوانوں کو کھیل کے مناسب مواقع فراہم کرنا ہے نجم سیٹھی اس معاملے میں فرنٹ سے لیڈ کر رہے ہیں اور پاکستان کرکٹ مستقبل میں بھی مزید ترقی کرے گی۔ بہت جلد بنگلہ دیش کی ٹیم بھی پاکستان کے دورے پر آئے گی۔ نعمان بٹ کا کہنا تھا گورننگ بورڈ ڈمی نہیں مکمل آزاد اور بااختیار ہے ہر رکن کو اپنے خیالات اور تجاویز میں آزادی حاصل ہے بہت سی تجاویز پیش ہوتی ہیں اراکین جن پر اتفاق نہیں کرتے وہ رد ہو جاتی ہیں۔ یہ تاثر غلط ہے کہ بورڈ آف گورنرز "ون مین شو" ہے ہم اتفاق رائے سے فیصلے کرتے ہیں۔ میں نے ریجنل صدر کے انتجاب کے حوالے سے تجویز پیش کی تھی ایسوسی ایشن کے صدور کو انتخابات لڑنے کے حوالے سے مکمل آزادی ہونی چاہیے اسے دو یا تین مرتبہ تک محدود کرنا آئین پاکستان سے متصادم ہے اگر کوئی شخص بار بار پاکستان کا وزیر اعظم بن سکتا ہے تو ریجنل کرکٹ ایسوسی ایشن کا صدر کیوں منتخب نہیں ہو سکتا۔ اسلام آباد ریجن کے صدر شکیل شیخ کی ملکی کرکٹ کے لیے خدمات ناقابل فراموش ہیں انہوں نے گورننگ بورڈ کے رکن اپنی ایسوسی ایشن کے صدر کی حیثیت سے کھیل اور کھلاڑیوں کی فلاح کے لیے بہت کام کیا ہے۔