میانمار روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی کررہا ، لاکھوں گھر چھوڑجانے پر مجبور ہوگئے : امریکہ

24 نومبر 2017

واشنگٹن(این این آئی)امریکہ نے بھی روہنگیا مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کو نسل کشی قرار دے دیا۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ایک بیان میں امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن نے کہاحقائق بتاتے ہیں کہ میانمار روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی کر رہا ہے۔انہوں نے مزید کہا حقائق کے جائزے کے بعد واضح ہے کہ حکومت روہنگیا کی نسل کشی کر رہی ہے۔ کسی قسم کی بھی اشتعال انگیزی روہنگیا پر جاری افسوسناک مظالم کی توجیہہ نہیں ہوسکتی۔امریکی وزیر خارجہ کا یہ بھی کہنا تھا برمی فوج، سکیورٹی فورسز اور مقامی ملیشیا کے مظالم نے لاکھوں روہنگیا مسلمانوں کو اپنے گھروں کو چھوڑنے پر مجبور کیا ہے۔واضح رہے کہ امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن نے گزشتہ ہفتے میانمار کا دورہ کیا تھا۔دوسری جانب پوپ فرانسس میانمار کے فوجی سربراہ کے ساتھ روہنگیا مسلمانوں کے معاملہ پر ملاقات کریں گے۔ میڈیارپورٹس کے مطابق اْن کے دورہ میانمار کا آغاز پیرسے ہوگا۔ ہمسایہ ملک، بنگلہ دیش روانگی سے کچھ ہی دیر قبل پونٹف (بابائے اعظم) سینئر جنرل مِن آنگ ہلینگ سے ملاقات کریں گے۔میانمار کے کارڈنل چارلس بْو نے پوپ کو اِس بات پر قائل کیا ہے کہ وہ اپنے شیڈول میں جنرل کے ساتھ ملاقات کا اضافہ کریں۔بْو نے پوپ کو اِس بات کا بھی مشورہ دیا اپنے دورے میں وہ روہنگیا کی اصطلاح استعمال نہ کریں۔ اس خوف کی بنا پر کہ اِس سے اکثریتی بودھ ملک میں اشتعال بڑھ سکتا ہے۔

امریکی وزیر خارجہ