پاکستان عوامی سوسائٹی،کویت کے زیرِ اہتمام یومِ اقبال کی پُروقار تقریب

24 نومبر 2017

عظیم فلسفی شاعر علامہ محمد اقبال کی تحریک پاکستان اور اُمت مسلمہ کیلئے خدمات کو بھر پور خراج تحسین پیش کیا گیا،تقریب میں ماہرِ اقبالیات سیموئیل شروپ شاعر ، پروفیسر ڈاکٹر سید عبدالرحمن، حافظ شفیق الرحمن اور علامہ اقبال کے پوتے منیب اقبال کا خصوصی خطاب
پاکستان عوامی سوسائٹی،کویت کے زیرِاہتمام شاعرِ مشرق علامہ محمد اقبال کے 140ویں یومِ ولادت کے موقع پر ”یادِ اقبال“ کی ایک پُر وقار تقریب کا انعقاد ہوا۔جس میں سفارت خانہ پاکستان کے کمیونٹی ویلفئیر اتاشی ڈاکٹر عمر جاوید کے علاوہ کمیونٹی کی کثیر تعداد نے شرکت کی ۔ تقریب کا آغاز حافظ توقیر احمد اور حافظ غفور احمد نے تلاوتِ قرآن حکیم سے کیا ۔ جبکہ نعتِ رسول کی سعادت آفتاب گوندل نے حاصل کی ۔محمد حنیف قریشی ، میاں محمد آصف اور کاشف کمال نے پروگرام کی نظامت کرتے ہوئے اقبال کی شخصیت اور افکار کے اہم گوشوں کا احاطہ کیا ۔ سفارت خانہ پاکستان کے کمیونٹی ویلفئر اتاشی ڈاکٹر عمر جاوید، مسز عظمی عامر ، عثمان حنیف اورمیاں وسیم سجادنے فکرِ اقبال کے حوالے سے اپنے خیالات کا اظہار کیا ۔ تقریب میں معروف مذہبی اسکالر تسلیم صابری نے اقبال کے کلام شکوہ ،جوابِ شکوہ ، جبکہ رضوان بھٹی اور ظفر غوری نے اقبال کے معروف کلام کو انتہائی خوبصورتی کے ساتھ پیش کیا۔نو مسلم اسکالر سمیوئیل شروپ شاعر ، ماہرِ اقبالیات پروفیسر ڈاکٹر عبدالرحمن، نامور صحافی اور ورلڈ کالمسٹ کلب کے چیئرمین حافظ شفیق الرحمن اور جگر گوشہ جگرِ اقبال منیب اقبال نے تقریب کے شرکاءسے خصوصی خطاب فرماتے ہوئے اقبال کی فکر کو ترویج دینے کی ضرورت پر زور دیا ۔ پاکستان عوامی سوسائٹی ،کویت کے پروگرام آرگنائزر عطا الہی نے اقبال کے کلام اور ان کی نادر و نایاب تصاویر پر مبنی ڈاکومینٹری پیش کی ۔ جسے شرکائے محفل نے خوب سراہا ۔ سید جعفر صمدانی ،صدر پاکستان عوامی سوسائٹی نے مہمانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اقبال کی فکر اور تصور ہی پاکستان کی بنیاد ہے ۔ اقبال پاکستان کے ذریعے اُمت مسلمہ کے اتحاد اور دنیا میں امن کے خواہاں تھے ۔ ادارہ منہاج القرآن انٹرنیشنل ،کویت کے صدر حاجی عبدالرشید نے مسلمانوں کے باہمی اتحاد، اور پاکستان کی سربلندی کے لیے اللہ پاک کے حضور دعا فرمائی ۔ تقریب کا اختتام پُرتکلف عشائیہ سے ہوا ۔