اسحٰق ڈار کے زیر غور تمام حساس اور اہم فائلیں وزیراعظم کے دفتر منتقل

24 نومبر 2017

اسلام آباد (عترت جعفری) اسحٰق ڈار کی وزارت خزانہ کی ذمہ داریوں سے سبکدوشی کے بعد سابق وزیر خزانہ کے زیر غور تمام حساس اور اہم فائلیں وزیراعظم کے دفتر منتقل کردی گئی ہیں۔ وزارت خزانہ کے اندرونی ذرائع نے بتایا ہے کہ کیو بلاک کے چوتھے فلور جہاں پر وزیر خزانہ کا دفتر ہے کا عملہ اہم فائلیں بکسوں میں بھرتا رہا۔ اور پھر یہ بکسے وزیراعظم کے دفتر میں جمع کرادیئے گئے۔ کیونکہ وزارت خزانہ ریونیو اور اقتصادی امور کا چارج وزیراعظم کے پاس ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ ابھی تک وزارت خزانہ کے دفتری امور چلانے کیلئے وزیر مملکت یا مشیر کی تعیناتی کی تجویز ترک نہیں کی گئی اور اس سلسلہ میں غور جاری ہے۔ اسحٰق ڈار کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیر خزانہ جس روحانی سلسلے سے منسلک ہیں ان کے ایک اہم ترین رہنما بھی لندن میں ہیں اور اسحٰق ڈار سے رابطہ میں ہیں۔ وزارت خزانہ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ سیکرٹری خزانہ کی بانڈ کے اجراء کے سلسلے میں بیرون ملک روانگی اور ان کی ذمہ داریوں کے ’’لک آفٹر‘‘ چارج دینا خالی ازعلت نہیں۔ ایف بی آر اور وزارت خزانہ میں اہم تبدیلیاں متوقع ہیں۔ وزیراعظم کی طرف سے ایف بی آر میں بعض تعیناتیوں اور انکوائریز کا نوٹس بھی تبدیلی ہی کا پیش خیمہ ہے۔ ایف بی آر بالائی سطح پر ردو بدل متوقع ہے۔

فائلیں منتقل