کراچی سرکلر ریلوے منصوبے کی فنڈنگ کے سیکنڈ آپشن پر کام شروع

24 نومبر 2017

کراچی (سالک مجید) حکومت سندھ نے سی پیک سرمایہ کاری کے منصوبوں سے کراچی سرکلر ریلوے کے منصوبے پر خطیر سرمایہ کاری درکار ہے جس کیلئے وفاقی حکومت کے توسط سے سی پیک کی جے سی سی میٹنگ کے ساتویں اجلاس میں یہ معاملہ ایجنڈے پر زیر بحث آیا لیکن چینی حکام کے جواب اور رویے سے حکومت سندھ کو سخت مایوسی کا سامنا کرنا پڑا۔ جس کے بعد وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کے سی آر (کراچی سرکلر ریلوے) کے لئے سرمایہ کاری چین کی بجائے دیگر ذرائع سے حاصل کرنے کی ہدایت کردی اور صوبائی حکومت نے فوری طور پر ورلڈ بینک اور ایشین انفرا اسٹرکچر بینک سے منصوبے پر سرمایہ کاری فراہم کرنے کیلئے رابطہ قائم کرکے ابتدائی بات چیت بھی کرلی ہے اور اصولی فیصلہ کیا گیا ہے کہ کراچی سرکلرریلوے کے منصوبے کو سی پیک سرمایہ کاری منصوبوں سے الگ کرلیا جائے کیونکہ چین اس حوالے سے نہ صرف تاخیر کر رہا ہے بلکہ25 سے30 سالہ مدت کیلئے قرضہ بھی ایک دو فیصد سود کی بجائے ساڑھے 6 فیصدشرح سود پر فراہم کرنے کی پیشکش کر رہا ہے۔

کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ

سرکلر ٹرینوں کی ضرورت

مکرمی! اس وقت کراچی کے مکین سب سے زیادہ ٹرانسپورٹ کے مسائل سے دوچار ہیں حکومت ...