سمندری آلودگی سے پاک ریفائز کو خام تیل کی ترسیل یقینی بنانے کا عزم

24 نومبر 2017

کراچی (خصوصی رپورٹ :سید شعیب شاہ رم )پاکستان میں خام تیل سے پیٹرولیم مصنوعات تیار کرنے والی کمپنی بائیکو پیٹرولیم لمیٹڈ کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ پاکستان میں واحد سنگل پوائنٹ مورنگ کے ذریعے ساحل سے دور گہرے سمندر میں ہی خام تیل کیرئیر سے ریفائنری تک بلا تعطل ترسیل کا طریقہ کار اختیار کیا ہے۔ان خیالات کا اظہارجنرل مینیجر شہریار احمد نے نمائندہ نوائے وقت سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ سنگل پوائنٹ مورنگ (ایس پی ایم)بائیکو ریفائنری سے 7 اعشاریہ 7 ناٹیکل مائیل اور کراچی پورٹ سے 33 ناٹیکل مائیل کے فاصلے پر25میٹر سطح سمندر میں واقع 28 انچ قطر کی پائپ لائن ہے جس سے خام تیل براہ راست ریفائنری تک بھیجا جاتا ہے۔ ایس پی ایم پر ایک لاکھ DWT میٹرک ٹن کے حامل سپر ٹینکر( بڑے ویسل) سے تیل کی ترسیل باآسانی کی جاسکتی ہے۔اس موقع پر ایس پی ایم کے سیکورٹی مینیجر کمانڈر (ر) کلیم اسحاق کا کہنا تھا کہ بائیکو پاکستان میں خام تیل سے تیار کردہ مصنوعات کا 40% حصہ فراہم کر رہا ہے جس میں ایس پی ایم ایک اہم کردار ادا کر رہا ہے، انکا کہنا تھا کہ ایس پی ایم کے بند ہونے کی صورت میں پاکستان میں تیل کا بحران پیدا ہوسکتا ہے جس کے پیش نظر ایس پی ایم کی اسٹریٹجک اہمیت ناگزیر ہے۔ اس موقع پر ایڈمن اور لاجسٹکس مینیجر عادل پٹیل نے کہا کہ ترسیل کا عمل بہت احتیاط سے کیا جاتا ہے، کسی قسم کے حادثہ سے بچاؤ کیلئے پیشگی اقدامات کئے جاتے ہیں،جس میں عملہ کو خاص تربیت دی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سمندر کی حفاظت اور ماحول کو آلودگی سے پاک رکھنا ان کی ترجیح ہے۔ یہی وجہ ہے کہ بائیکو پاکستان کی سب سے بڑی ریفائنری بن گئی ہے۔ جنرل مینیجر شہریار احمد نے نوائے وقت کو بتایا ہے کہ پاکستانی کمپنی کا جدید بین الاقوامی معیار ملک کیلئے اثاثہ سے کم نہیں۔