پاکستان اور ایساف کے درمیان حکمت عملی اور طریق کار مزید بہتر بنانے کی ضرورت ہے ‘ چیک پوسٹ پر حملے کی مشترکہ تحقیقات مکمل

24 جون 2011
کابل (ثناءنیوز) پاکستان اور ایساف کے درمیان حکمت عملی اور طریقہ کار کو مزید بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔ دونوں افواج کے درمیان مشاورت سرحدی علاقوں میں شورش پسندوں کے خلاف کارروائیوں میں ہم آہنگی کے لئے معاون ثابت ہوں گے۔ پاکستان اور انٹرنیشنل سکیورٹی اسسٹنس فورسز ( ایساف ) کی جانب سے 17 جون کو پاک افغان بارڈر پر مہمند ایجنسی کے مقام زیارت میں ایک چیک پوسٹ پر پیش آنے والے واقعے کے سلسلے میں مشترکہ تحقیقات جمعرات کے روز اختتام پذیر ہوئیں، باوجودیکہ بات چیت کے دوران شورش پسندوں کی جانب سے چیک پوسٹ پر فائرنگ بھی کی گئی۔ امریکی سفارتخانے کے مطابق مہمند ایجنسی اور افغان صوبے ننگر ہار کے درمیان واقع اس چیک پوسٹ پر جہاں یہ واقعہ پیش آیا تھا ملاقات کے دوران حکام نے ایساف اور پاکستانی حکام کے ضبط و تحمل کی تعریف کی جس کی وجہ سے کوئی سنگین واقعہ رونما نہیں ہوا۔