بھارت نے پاکستانی دریاﺅں پر مزید 3 پاور پراجیکٹس تعمیر کرنے کا اعلان کر دیا

24 جون 2011
لاہور (سپشل کارسپانڈنٹ ) بھارت اور پاکستان کے درمیان کشن گنگا ڈیم کا تنازعہ ابھی حل نہیں ہو پاےاکہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں پاکستانی دریاﺅں پرڈیڑھ کھرب روپے کی خطیر رقم سے مزید تین پاور پروجیکٹس کی تعمیر کا اعلان کر دیا ہے بھارت کی سب سے بڑی پن بجلی پیدا کرنے والی کمپنی این ایچ پی سی مقبوضہ کشمیر کی پاور ڈویلپمنٹ کارپوریشن اور پاور ڈویلپمنٹ آف انڈیا سے مل کر ان پاور پروجیکٹس کی تعمیر کے کام کی نگرانی کرے گی جبکہ ”چنار ویلی پاور پروجیکٹ پرائیویٹ لمیٹڈ“ نامی ایک نیا ادارہ بھی قائم کر دیا گیا ہے جو ان نئے پاور پروجیکٹس کی تعمیر کا کام کرے گا مقبوضہ کشمیر میں جن تین نئے پاور پروجیکٹس کی تعمیر کا اعلان کیا گیا ہے ان میں 1000میگا واٹ صلاحیت والا پکل دل، 600میگا واٹ والا کیرو اور 520میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت والا کیوار نامی پروجیکٹ شامل ہیں ان تینوں پروجیکٹس پر مجموعی طور پر پندرہ ہزار (15000)کروڑ روپے خرچ کئے جائیں گے جن میں سے 2400کروڑ کی سرمایہ کاری بھارت کی سب سے بڑی پن بجلی پیدا کرنے والی کمپنی این ایچ پی سی کرے گی۔ پاکستان نے کشن گنگا ڈیم کی تعمیر کے حوالہ سے عالمی عدالت میں کیس دائر کر رکھا ہے اور ابھی تین دن قبل ہی دونوں ملکوں کے درمیان تنازعہ کا حل تلاش کرنے کے لئے پہلی بار دونوں ملکوں کے اعلیٰ افسران اور بین الاقوامی عدالت کے ماہرین نے گریز بانڈی پورہ جا کر پروجیکٹ کا تفصیلی معائنہ کیا ورلڈ بینک کی ٹیم نے بھی اس موقع پر انتہائی باریک بینی کے ساتھ پراجیکٹ کا جائزہ لیا اور پروجیکٹ کے حوالے سے متعدد سوالات کئے پاکستانی وفد نے بار بار ڈیزائن تبدیل کرنے کے حوالے سے سوالات اٹھائے اور بھارتی حکام سے کشن گنگا ڈیم کا ڈیزائن کا طلب کیا جسے پیش کرنے کے سلسلہ میں بھارتی حکام پس و پیش سے کام لیتے رہے پاکستان واٹر موومنٹ نے بھارت کی جانب سے پاکستانی دریاﺅں پر ڈیموں کی تعمیر کے مسئلہ پرشدید ردعمل ظاہر کیا ہے اور کہا ہے کہ بھارت پاکستانی حکمرانوںکی کمزور پالیسیوں سے فائدہ اٹھاتے ہوئے مقبوضہ کشمیر میں متنازعہ ڈیموں کی تعمیر میں مصروف ہے وہ پاکستان سے مذاکرات میں کسی صورت سنجیدہ نہیںہے بلکہ مذاکرات کو ہتھیار کے طور پر استعمال کرتے ہوئے پاکستانی دریاﺅں پر ڈیموں کی تعمیر میں مصروف ہے پاکستان واٹر موومنٹ کے کنوینئر حافظ سیف اللہ منصور نے کہاکہ پاکستان بھارت مذاکرات سے پاکستانی دریاﺅں پر ڈیموں کی تعمیرکا مسئلہ حل نہیں ہو گا پاکستان کو اپنے دریاﺅں پر سے بھارتی قبضہ چھڑانے کےلئے طاقت کے استعمال کا آپشن کھلا رکھنا چاہئے۔