18گھنٹے سے زائد لوڈشیڈنگ، گرمی کی شدید لہر جاری، 6افراد جاںبحق

24 جون 2011
لاہور (کامرس رپورٹر+ نامہ نگاران) شدید گرمی مےں 18گھنٹے تک لوڈشیڈنگ سے شہری بلبلا اٹھے جبکہ سڑکیں بازار سنسان ہوگئے اور کاروبار بھی ٹھپ ہو کر رہ گیا۔ گرمی اور حبس کی وجہ سے خاتون سمیت 6 افراد جاںبحق ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز شارٹ فال مےں مزید 649 میگا واٹ کا اضافہ ہوگیا جس سے اسکا مجموعی حجم 3111 میگا واٹ سے بڑھ کر 3760 میگا واٹ تک پہنچ گیا اور بجلی کی طلب 17993 میگا واٹ تک پہنچ گئی جبکہ پیداوار 14233 میگا واٹ رہی جس پر شہروں میں 12 گھنٹے اور دیہات میں 18 گھنٹے سے زائد اعلانیہ اور غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کی گئی۔ صوبائی دارالحکومت کے گنجان آباد اور گردونواح کے علاقوں اندرون شہر، مصری شاہ، بادامی باغ، شاہدرہ، مریدکے، اچھرہ، مزنگ، علامہ اقبال ٹاﺅن، نواب ٹاﺅن سمیت دیگر علاقوں مےں بھی لوڈشیڈنگ کی گئی۔ دریں اثناءمختلف علاقوں مےں لوگوں نے بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کیخلاف احتجاجی مظاہرے کئے۔ سرگودھا مےں عبدالرحمن، شفیق، پپو، مسعود اور اسلم، ملک وال مےں اللہ دتہ کا والد اور یونس کی والدہ جاںبحق ہوگئے۔ پیپکو ترجمان کے مطابق بجلی کی پیداوار میں کمی منگلا سے پانی کے اخراج میں کمی کے باعث ہوئی۔ گوجرانوالہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق سیشن کورٹ مےں پیشی کے لئے آنے والے 65سالہ محمد عبداللہ اور محمد یاسر، سیالکوٹ روڈ پر عباس شدید گرمی سے بے ہوش ہوگئے۔ گذشتہ روز سیشن عدالتوں مےں بجلی کی آنکھ مچولی جاری رہی جبکہ جوڈیشل مجسٹریٹ بلاک مےں بجلی ساڑھے پانچ گھنٹے سے زائد بند رہی۔ پنڈی بھٹیاں سے نامہ نگار کے مطابق غیر اعلانیہ طویل لوڈشیڈنگ کےخلاف شہریوں نے شدید احتجاج کیا۔