ایبٹ آباد کمشن مسترد کرتے ہیں‘ اسلام آباد میں صبح شام کرپشن کی بولیاں لگ رہی ہیں: نوازشریف

24 جون 2011
مظفر آباد + راولاکوٹ (نمائندہ خصوصی + وقت نیوز + ریڈیو نیوز) پاکستان مسلم لیگ کے قائد میاں نواز شریف نے ایبٹ آباد کے واقعہ پر بنائے گئے تحقیقاتی کمشن کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس مےں اپوزیشن لیڈر سے مشاورت نہیں کی گئی ہم اسے نہیں مانتے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور اس کے عوام کے مفاد کے لئے چاروں صوبوں اور آزاد کشمیر سے لانگ مارچ بھی کرنا پڑا تو دریغ نہیں کروں گا۔ آزاد کشمیر مےں تبدیلی کی لہر چل پڑی ہے۔ انشاءاللہ نیا آزاد کشمیر بنے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مظفرآباد اور راولاکوٹ مےں جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مظفر آباد مےں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عوام کے تعاون سے مسلم لیگ کی حکومت قائم کر کے مسئلہ کشمیر کا حل کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق کرنے کے ساتھ انقلابی تعمیر و ترقی کریں گے۔ پنجاب کے میڈیکل کالجز مےں آزاد کشمیر کی نشستوں مےں اضافہ کرینگے۔ منگلا سے نیلم اور کنٹرل لائن تک موٹروے بنائیں گے۔ ییلوکیب سکیم کا اجرا کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ لوٹا ہوا پیسہ قومی خزانہ مےں جمع کرانے تک حق کی آواز بلند کرتے رہینگے۔ انہوں نے کہا کہ مشرف نے کرگل کا محاذ کھول کر کشمیر کاز کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا۔ آزاد کشمیر مےں ہماری جیت ہوگی۔ راولا کوٹ مےں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسلام آباد مےں کرپشن کی بولیاں لگ رہی ہےں، کرپٹ لوگوں کو چن چن کر سرکاری اداروں مےں لگایا جاتا ہے۔ وزیراعظم گیلانی مسلم لیگ ن سے گھبرا گئے ہےں۔ مسلم لیگ (ن) آزاد کشمیر الیکشن میں کامیابی حاصل کریگی۔ ہمارے یہاں آنے کے بعد حکومتی ارکان بھی آزاد کشمیر آنے لگے۔ ہم جانتے ہیں کہ کون لوگ جوڑ توڑ کرتے ہیں اور ٹکٹوں کے فیصلے کہاں ہوتے ہیں۔ الیکشن میں کوئی دھاندلی نہیں ہونے دینگے۔ آزاد کشمیر میں بھی نیا انقلاب آئیگا۔ ہماری اقتصادی حالت خطرے کی حدود کو چھو رہی ہے۔ ملک میں قائم مصنوعی جمہوریت نے کشمیر کاز کو نقصان پہنچایا۔ 500 ارب روپے کرپشن کی نذر ہو رہے ہیں۔ لوٹ مار اور کرپشن کا بازار گرم ہے۔ عوام نعرے بازی اور جھوٹ کی سیاست میں نہ آئیں۔ بھارت نے 5 ایٹمی دھماکے کئے تو انکا طرزِ گفتگو بدل گیا جواب میں 6 دھماکے کئے تو واجپائی پاکستان بس میں بیٹھ کر آئے۔ ہمارے دور میں دہشت گردی نام کی کوئی چیز نہیں تھی۔ پہلے اپنے آپ کو درست کرنا اور اپنے گھر کی خبر لینی ہے۔ ہم حکومت کی توجہ دلانا چاہتے ہیں کہ دہشت گردی کا خاتمہ کون کریگا؟ ایبٹ آباد آپریشن کرکے پاکستانی سالمیت کو نقصان پہنچایا گیا۔ سپریم کورٹ کے احکامات کی خلاف ورزی نہیں ہونے دینگے۔ حکومت کو سوئس کیس میں سپریم کورٹ کے حکم پر عمل کرتے ہوئے خط لکھنا چاہئے۔ سوئس بینکوں میں پاکستان کے عوام کی رقم ہے جو واپس آنی چاہئے۔ بتایا جائے کہ سوئس بینکوں میں رکھی ہوئی رقم کس کی ہے۔ سپریم کورٹ کے حکم کو پاﺅں تلے روندا جا رہا ہے۔ پارلیمنٹ کے اجلاس مےں طے ہوا تھا کہ وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر مل کر ایبٹ آباد کے واقعہ پر تحقیقاتی کمشن تشکیل دیں گے۔ یہ لوگ کمشن کی تشکیل پر بھاگتے رہے ہےں پھر ہماری مرضی کے بغیر کمشن تشکیل دے دیا گیا ہم اسے تسلیم نہیں کرتے ۔ چیف جسٹس نے کمشن کی سربراہی کے لئے جسٹس کے نام کی منظوری دی تاہم باقی ارکان کے حوالے سے ہم حکومتی فیصلہ نہیں مانتے۔ نجی ٹی وی پر گفتگو کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا بے نظیر کی سالگرہ پر صدر کی طرف سے انہیں اتنا یاد کیے جانا سمجھ سے بالاتر ہے۔ پاکستان کے عوام مہنگائی، بے روزگاری، لوڈشیڈنگ اور غربت جیسے مسائل کی دلدل مےں پھنسے ہوئے ہےں۔ عوام کو ان مسائل سے نجات دلانے کے لئے سڑکوں پر بھی آنا پڑا تو دریغ نہیں کرینگے۔ آزاد کشمیر مےں دھاندلی ہوئی تو خاموش نہیں رہیں گے۔