جمہوری نظام بچانے کا ”گھمسان“ آخری مراحل میں، نواز، زرداری ملاقات فیصلہ کن ہو گی

24 دسمبر 2009
اسلام آباد (جی این آئی) مسلم لیگ ن کے قائد میاں محمد نواز شریف کی لندن سے پاکستانی ہنگامی واپسی سے پاکستان کی سیاست میں آئندہ چند روز میں اہم تبدیلیاں متوقع ہیں۔ ذرائع کے مطابق مسلم لیگ کی قیادت کو احساس ہو گیا ہے کہ صدر زرداری کو سسٹم سے نکالے جانے کی صورت میں پورا سسٹم ختم ہو جائیگا اور جمہوریت کی بساط لپیٹ دی جائیگی۔ اس صورتحال کا ادراک ہونے پر نواز شریف فوری وطن پہنچے ہیں۔ ذرائع کے مطابق نواز شریف ایک طرف مسلم لیگ ن کے ان ”باکس“ کو خاموش کرائیں گے جو پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن کے درمیان ”سیزفائر“ کیخلاف ہیں اور پیپلزپارٹی سے محاذآرائی کو ضروری سمجھتے ہیں اور مڈٹرم الیکشن کی امید لگائے بیٹھے ہیں۔ ذرائع کے مطابق صدر زرداری اور نواز شریف میں آئندہ چند روز میں ایک ” فیصلہ کن“ ملاقات ہو گی جس میں نواز شریف صدر زرداری پر واضح کریں گے۔ سترہویں ترمیم کے خاتمے کے سوا جمہوریت کو بچانے کا کوئی دوسرا راستہ نہیں۔ ذرائع کے مطابق جمہوری نظام کو بچانے اور اسے ختم کرنے کا ”گھمسان“ آخری مراحل میں داخل ہو گیا ہے۔ ایک طرف تو صدر زرداری ، نواز شریف، وزیراعظم گیلانی سمیت الطاف حسین، اسفند یار ولی اور مولانا فضل الرحمن جمہوری نظام کو بچانے کیلئے پوری طاقت کے ساتھ میدان میں آ چکے ہیں اور آخری را¶نڈ شروع ہو چکا ہے۔ دوسری طرف جنوری میں عدلیہ کی طرف سے ایسے فیصلے متوقع ہیں جن کے ہولناک اثرات سے موجودہ نظام کو بچانا بہت مشکل ہو گا۔