حکومت نے خدمات لیں تو لوٹی ہوئی پائی پائی وصول کرکے خزانے میں جمع کرائینگے: الماس بوبی

24 دسمبر 2009
اسلام آباد (آئی این پی) سپریم کورٹ کی طرف سے خواجہ سراﺅں کو وراثت میں حصہ دینے کے حکم پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے سپریم کورٹ میں زیر سماعت خواجہ سرا کیس کے درخواست گزار الماس بوبی نے کہا ہے کہ چاہے ورثاء1 سے ڈیڑھ فیصد حصہ ہی دے دیں لیکن خواجہ سراﺅں کو وراثت میں حصہ دیں تاکہ وہ باعزت زندگی گزار سکیں ۔ گزشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خواجہ سرا الماس بوبی نے کہا کہ حکومت قرضوں کی وصولی کے حکم سے لے کر کوئی بھی کام کروانا چاہے خواجہ سراءکرنے کو تیار ہیں بنیادی مسائل روزگار کا حصول‘نادرا میں جنس کے خانے کا ہونا ‘وراثت میں حصہ‘تحفظ کا احساس ہونا ہے جن کے بارے میں سپریم کورٹ نے احکامات جاری کر دیئے ہیں جو کہ قابل تحسین ہیں۔ الماس بوبی نے کہا کہ اگر حکومت قرضہ جات کی وصولی کے لئے خدمات لیتی ہے تو قوم کی لوٹی ہوئی دولت کی پائی پائی وصول کرکے سرکاری خزانے میں جمع کروائیں گے۔