A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined index: category_data

Filename: frontend_ver3/Templating_engine.php

Line Number: 35

بنوں‘ خیبر ایجنسی‘ جنوبی وزیرستان : 2 شدت پسند جاں بحق‘ لڑکیوں کا سکول تباہ‘ سکاﺅٹس کیمپ پر خود کش حملے کی کوشش ناکام

24 دسمبر 2009
وانا (اے ایف پی + آن لائن+ثناءنیوز) جنوبی وزیرستان میں سکیورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپوں کے دوران دو شدت پسند جاں بحق اور چار زخمی ہوگئے جبکہ خیبر ایجنسی میں طالبان نے لڑکیوں کا سکول تباہ کر دیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق لدھا اور آسمان منزہ میں فورسز اور شدت پسندوں کے درمیان جھڑپیں ہوئیں فائرنگ کے تبادلے میں دو شدت پسند مارے گئے اور چار زخمی ہوئے ۔ جنوبی وزیرستان میں سولہ اکتوبر سے جاری آپریشن راہ نجات میں اب تک چھ سو سے زائد شدت پسند جاں بحق اور متعدد زخمی ہوچکے ہیں۔ شدت پسندوں کے زیادہ تر ٹھکانوں اور تربیتی مراکز کا کنٹرول فورسز نے حاصل کرلیا ہے۔ دوسری جانب جنوبی وزیرستان کے محسود قبائل نے علاقے میں امن کے قیام اور دیگر مسائل پر عمائدین کا جرگہ ٹانک میں طلب کرلیا ہے۔ دریں اثناءبنوں میں ٹوچی اسکاﺅٹ کیمپ پر خودکش حملے کی کوشش سکیورٹی فورسز نے ناکام بنا دی ،حملہ آور مارا گیا ۔ بم ڈسپوزل اسکواڈ نے موقع پر پہنچ کر گاڑی میں موجود پندرہ سو کلوگرام دھماکہ خیز مواد ناکارہ بنادیا۔تفصیلات کے مطابق بدھ کی صبح پانچ بجے تھانہ صدر کی حدود میں ایک خودکش حملہ آور نے گاڑی کے ذریعے ٹوچی اسکاوٹ کیمپ کو نشانہ بنانے کی کوشش کی۔سکیورٹی فورسز نے حملہ آور کو رکنے کا اشارہ کیا لیکن اس نے رکنے سے انکار کردیا۔جس پر سکیورٹی فورسز نے فائرنگ کرکے خودکش حملہ آور ہلاک کردیا۔چارسدہ کے علاقے شبقدر مےں واپڈا کے دفتر کے سامنے 10 کلو گرام واٹر کولر بم کو ناکارہ بنا دےا گےا ہے۔ ضلع چارسدہ کے تھانے شبقدر کے اےس اےچ او کے مطابق پولےس کو اطلاع ملی تھی کہ واپڈا کے دفتر کے قرےب بم موجود ہے اس اطلاع پر پولےس کی بھاری نفری نے علاقے کو گھےرے مےں لے لےا اس دوران تعلےمی ادارے خالی کرا لےے گئے اور شبقدر پشاور سڑک ٹرےفک کے لےے بند کر دی گئی ۔ بم ڈسپوزل اسکواڈ نے واٹر کولر مےں موجود 10 کلو گرام وزنی بم ناکارہ بنا دےا ۔ خیبر ایجنسی میں تباہ ہونیوالے لڑکیوں کے سکول کے 21 کمرے جو کہ مکمل وطر پر تباہ ہو گئے۔ حملے کے وقت عمارت خالی تھی اسلئے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ قبائلی انتظامیہ کے چیف شفیع اللہ وزیر نے بتایا کہ 6 ہفتے کے دوران یہ 9 واں تعلیمی ادارہ ہے جسے طالبان نے تباہ کیا۔