کراچی : بھارت کا پاکستان سے اپنے 9 بچوں سمیت 100 ماہی گیر لینے سے انکار

24 دسمبر 2009
کراچی (ریڈیو نیوز + نیوز ایجنسیاں) بھارت نے پاکستان کی جانب سے جذبہ خیرسگالی کے طورپررہاکئے گئے اپنے 100ماہی گیروں کو واپس لینے سے انکارکر دیا ہے، جس پر ان کی رہائی ملتوی کر دی گئی ہے۔ گزشتہ روز وزیراعظم کے حکم پر ملیر جیل کراچی میں قید 100بھارتی ماہی گیروں کو جب گاڑیوں میں سوار کیا جا رہا تھا تو جیل حکام نے اعلان کر دیا کہ بھارتی حکومت نے اپنے شہریوں کو فی الحال واپس لینے سے انکار کرتے ہوئے روانگی کا پروگرام موخر کرنے کی درخواست کی ہے۔ جس پر بھارتی ماہی گیر ششدر رہ گئے انہوں نے اپنی حکومت کے خلاف شدید احتجاج کیا اور نعرے بازی کی۔ ان ماہی گیروں میں10 مسلمان ¾ 9بچے اور ایک کینسر کا مریض بھی شامل ہے جو کرن ہسپتال میں پاکستانی حکومت کے خرچے پر زیر علاج تھا۔ سپرنٹنڈنٹ جیل اشرف زمانی نے بتایا کہ قیدیوں کی روانگی کا پروگرام موخر کرنے میں ہمارا کوئی قصور نہیں۔ بھارتی حکومت نے ہماری وزارت خارجہ اور سے رابطہ کرکے درخواست کی کہ قیدیوں کو لےنے کے انتظامات مکمل نہیں ہیں اس لئے روانگی عارضی طور پر موخر کی جائے۔ اسلام آباد میں بھارتی ہائی کمشن نے اپنے اعلامیہ میں کہا کہ پاکستانی دفتر خارجہ کی طرف سے منگل کو بھارتی ماہی گیروں کی رہائی کی باضابطہ اطلاع مل چکی ہے۔ اور اب ان کی وطن روانگی کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ بھارت نے ماہی گیروں کو واپس لینے سے انکار نہیں کیا بلکہ ضروری انتظامات تک واپسی موخر رکھنے کی درخواست کی ہے۔ اب واپسی کی تاریخ دونوں ممالک باہمی مشاورت سے طے کریں گے۔